200 ریال انشورنس کروانے والے غیر شرعی کام کرتے ہیں ، سعودی مفتی

200 ریال انشورنس کروانے والے غیر شرعی کام کرتے ہیں ، سعودی مفتی
فوٹو سوشل میڈیا

ریاض:  سعودی عرب کے  فقہی کونسل کے سربراہ ڈاکٹر سعد الخثلان نے کہا ہے کہ 200ریال میں میڈیکل انشورنس کارڈ بنوانا جائز نہیں۔


سعودی فقہی کونسل کے سربراہ نے سعودی ٹی وی چینل پر پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ عام طور پر تارکین وطن خانہ پری کیلئے اس قسم کی میڈیکل انشورنس اسکیم خرید لیتے ہیں۔ انہیں پتہ ہوتا ہے کہ یہ رقم صرف کارڈ جاری کرانے کیلئے دی جارہی ہے۔

اسکے بالمقابل انہیں طبی معائنہ جات اور اسپتالوں، میڈیکل سینٹرز، لیباریٹریوں اور پولی کلینکس سے کسی طرح کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ ڈاکٹر الخثلان نے بتایا کہ اس قسم کی میڈیکل انشورنس اسکیم جوئے کے دائرے میں داخل ہوگی۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں انشورنس ورکروں ۔ غیر ملکی شہریوں اور سمیت ان کے اہلخانہ پر انشورنس کروانے کا فیصلہ لاگو کیا گیاہے ۔

ویڈیو دیکھیں