درآمدی ڈیوٹی سے موبائل فونز کی فروخت میں کمی کا خدشہ

درآمدی ڈیوٹی سے موبائل فونز کی فروخت میں کمی کا خدشہ
تصویر بشکریہ ٹوئٹر

کراچی:حکومت کی جانب سے موبائل فونز کی درآمد پر ڈیوٹی 44 سے 52 فیصد کے نفاذ سے ان کی فروخت 70 فیصد گھٹنے کے خدشات پیدا ہوگئے ہیں ڈیوٹی میں اضافے سے مختلف اقسام کے سمارٹ فونز 20 ہزارروپے تک مہنگے ہوجائیں گے۔


20 ہزار مالیت کا سمارٹ فونز 11 ہزار روپے مہنگا ہوکر 31 ہزارروپے کی سطح پر آگیاہے جبکہ 30 ہزار کا سمارٹ فون 14 ہزار مہنگا ہوکر44 ہزار کا ہوگیا۔ واضح رہے کہ وفاقی حکومت نے موبائل فونز کی درآمد پر ڈیوٹی، جی ایس ٹی ڈلیوی اور انکم ٹیکس کی شرح بڑھادی ہے۔ایف بی آر کی جانب سے غیرتصدیق شدہ موبائل فون پرڈیوٹی اور ٹیکسوں پر اضافی جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے۔

اس ضمن میں ایف بی آر کے جاری کردہ کسٹمز نوٹیفکیشن کے مطابق مجموعی ڈیوٹی اور ٹیکسوں پراضافی10 فیصد جرمانہ وصول کرنے کے بعد غیر تصدیق شدہ موبائل فونز کی کلیئرنس کی جائے گی۔واضح رہے کہ غیرتصدیق شدہ موبائل فون کی تصدیق کا عمل 15جنوری کو ختم ہوگیا ہے۔

ملک میں غیریقینی کیفیت کی وجہ سے پہلے ہی گزشتہ 2 ماہ سے موبائل فونزکی درآمدات 50فیصد گھٹ گئی ہیں لیکن حکومت کے نئے اقدامات سے باقی ماندہ 50فیصد درآمدات بھی ختم ہوجائیں گی۔