’سازشیں کرکے وزیر اعظم بننے کی خواہش، عمران خان کی غلط فہمی ہے‘

05:17 PM, 18 Jul, 2018

لالہ موسیٰ :پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کی غلط فہمی ہے کہ وہ سازشیں کرکے وزیر اعظم بن سکتے ہیں لیکن وہ ان سازشوں میں کامیاب نہیں ہوں گے۔

لالہ موسیٰ میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ عمران خان صاف اور شفاف انتخابات سے ڈرتے ہیں اور اس لیے کٹھ پتلی اتحاد بنانے کی کوشش کی جارہی ہے۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ اگر عمران خان معروف ہوتے یا سیاست میں جگہ رکھتے تو پھر کیوں انہیں اتنی اہمیت دی جاتی، عمران خان صاف اور شفاف انتخابات سے اس لیے ڈرتے ہیں کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ وہ اس طرح مقابلہ نہیں کرسکتے۔

یہ بھی پڑھیئے:آصف زرداری اور فریال تالپور کا نام ای سی ایل سے نکال دیا گیا

 

 

ان کا کہنا تھا کہ گالم گلوچ اور نفرت کی سیاست کرکے مختصر وقت میں شاید فائدہ مل جائے لیکن اس سے معاشرے اور نوجوانوں کے لیے طویل مدت میں بہت نقصان پہنچے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام اپنی خواہش کے مطابق جسے چاہیں ووٹ دیں اور ہمیں امید ہے کہ ہم تمام سازشوں کو شکست دیں گے۔

پیپلز پارٹی کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ ہمارے جیالے اور کارکنان سازشوں کا سامنا کرنے کو تیار ہیں، یہ میرا پہلا انتخاب ہے، میری کوشش ہے کہ میں اپنے نظریے اور عوام دوست پالیسی کو سیاست میں ترجیح دوں۔

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ کالعدم تنظیموں کا انتخابات میں حصہ لینا، جمہوریت کے لیے خطرہ ہے، اس معاملے پر اعتراض کیا اور سینیٹ کی پارلیمانی کمیٹی پر بھی اس پر سوال اٹھائے تھے لیکن اس کے باوجود ان کو انتخابات میں اجازت دینا قابل مذمت ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے مزید کہا کہ ہماری کوشش رہی ہے کہ ہم عورتوں کو اپنے معاشرے میں سامنے لائیں، انہیں فائدہ دیں اور شناخت دیں، اسی سلسلے میں ہم نے پہلے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام شروع کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے منشور میں معاشی پالیسی ایک جیسی ہیں لیکن پیپلز پارٹی کے منشور میں اسے بالکل مختلف رکھا گیا ہے، اس کے علاوہ بھوک مٹاؤ پروگرام کے ذریعے بھی غریب عوام کو حقوق دینے کی کوشش کریں گے۔

سابق وزیر اعظم نواز شریف سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کا ٹرائل عدالت میں ہونا چاہیے لیکن جو بنیادی حقوق ہے وہ سب کو ملنے چاہیں۔

 

مزیدخبریں