نیو یارک: امریکی سائنسدانوں نے خبردار کیا ہے کہ درد کی دوائیوں کے ساتھ نیند کے لیے گولیاں کھانے والے افراد کی جان خطرے میں پڑ سکتی ہے۔

کیلیفورنیا کے سائنسدانوں کی تازہ تحقیق کے مطابق وہ افراد جو ڈاکٹروں کی بتائی ہوئی ادویات کے ساتھ نیند کی گولیاں بھی کھاتے ہیں ان کی جان کو دوائی کی زیادہ مقدار ہونے کی وجہ سے خطرات لاحق ہوسکتے ہیں۔سائنسدانوں نے ڈاکٹروں اور مریضوں کو تنبیہ کی ہے کہ وہ درد سے نجات کے لیے کھائی جانے والی ادویات کے ساتھ سونے کی گولیاں ہر گز نہ لیں۔

مطالعے کے دوران سائنسدانوں نے 18 سے 64 سال کے ایسے 3 لاکھ افراد کا جائزہ لیا جو 2001 سے 2013 کے درمیان مسلسل درد کش دوائیں لیتے رہے تھے۔مطالعے سے معلوم ہوا کہ ایسے مریض جو درد کا علاج کرنے کے لیے پین کلر لیتے تھے ان میں 2001 میں بینزوڈائزوپائن 9 فیصد تھی لیکن 2013 تک اس میں 17 فیصد تک اضافہ ہوگیا۔

مطالعے کے نگراں ڈاکٹر ایرکسن نے دعویٰ کیا ہے کہ بینزوڈائزوپائن اور پین کلر نہ لینے والے افراد کے ہسپتال میں داخل ہونے کے امکانات 15 فیصد تک کم ہوجاتے ہیں۔

مصنف کے بارے میں