فیس بک پر لائکس خریدنا اور پوسٹ بوسٹ کرنا حرام ہے:مصری عالم دین کا فتویٰ

فیس بک پر لائکس خریدنا اور پوسٹ بوسٹ کرنا حرام ہے:مصری عالم دین کا فتویٰ

قاہرہ: وہ فیس بک صارفین جو اپنے فیس بک لائیکس کسی بھی مقصد چاہے بزنس کے لیے ہو  یا دوستوں پر بازی لے جانے کے چکر میں خریدتے ہیں یا اپنی کسی بھی پوسٹ کو بوسٹ کرواتے ہیں اس کے متعلق مصری عالم دین کا اب تک  کا بڑا فتویٰ سامنے آگیاہے ۔


یہ بھی پڑھیں:بیساکھی میلے کیلئے پاکستان آنیوالی سکھ خاتون نے اسلام قبول کر کے شادی رچا لی

اب تقریباََ ہر کوئی چاہتا ہے کہ اس کی پوسٹ کو زیادہ سے زیادہ لائکس اور شیئر ملیں مگر مصر کے ایک عالم دین نے جعلی لائکس خریدنے اور پوسٹ بوسٹ کرنے کو حرام قرار دیدیا ہے۔مصر کے مفتی نے دعویٰ کیا ہے کہ جعلی لائکس خریدنا اور پوسٹ بوسٹ کرنا بے ایمانی کے زمرے میں آتا ہے اور ایسا کرنا اسلام میں حرام ہے۔ فیس بک پر پوسٹ بوسٹ کرنے کا مطلب ہے کہ آپ فیس بک پیسوں کے عوض زیادہ سے زیادہ لوگوں تک اپنی پوسٹ پہنچاتے ہیں اور لائکس، کمنٹس اور شیئرز حاصل کرتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:اسلام آباد میں نئے ہوائی اڈے کے کمرشل آپریشن کے آغاز کی نئی تاریخ

آج کل سوشل میڈیا مارکیٹنگ کا استعمال تقریباً ہر برانڈ ہی کرتا ہے کیونکہ یہ ایک بہترین ایڈورٹائزنگ پلیٹ فارم ثابت ہوا ہے اور زیادہ سے زیادہ لوگوں تک اپنی بات یا پراڈکٹ پہنچانے کا بہترین ذریعہ بن چکا ہے۔بہرحال مصری مفتی کے مطابق ایسا کرنا بے ایمانی اور دھوکہ دہی ہے اور جعلی لائکس خریدنا یا پوسٹ بوسٹ کرنے سے حقیقی حالات کی ترجمانی نہیں ہوتی اور اصل حالات لوگوں کے سامنے نہیں آتے، اس لئے ایسا کرنے کو دھوکہ دہی اور غیر اخلاقی قرار دینا چاہئے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں