انصاف کا ترازو ہونا چاہیے، تحریک انصاف کا نہیں، نواز شریف

انصاف کا ترازو ہونا چاہیے، تحریک انصاف کا نہیں، نواز شریف

اسلام آباد: اسلام آباد کی احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ دونوں فیصلے سامنے رکھیں تو دہرا معیار ثابت ہو گا انہیں نہیں پتہ کہ انہوں نے قومی خزانے کو کیا نقصان پہنچایا تاہم خیالی تنخواہ میرا اثاثہ بن گئی اور جس نے خود تسلیم کیا اسے کہا جا رہا ہے کہ اثاثہ نہیں۔


نواز شریف نے کہا کہ شک کا فائدہ دیے بغیر وزیراعظم کو ہٹا دیا جاتا ہے،جو تنخواہ میں نے لی ہی نہیں اسے اثاثہ بنا دیا جاتا ہے اب دہرا معیار نہیں چلے گا اور ہر کسی کے لیے قانون کا ایک ہی سکہ چلے گا۔ انصاف کا ترازو ہونا چاہیے،تحریک انصاف کا نہیں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ ہم انصاف کی بحالی کے لیے تحریک چلائیں گے اور فیصلے کے سامنے بندھ باندھ کر کھڑے ہوں گے اور عوام کے پاس بھی جائیں گے۔ نواز شریف نے سوال کیا کہ ڈکٹیٹروں کو کس نے گلے میں ہار پہنایا،کس کے دباؤ پر پرویز مشرف سے حلف لیا اور دیا گیا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں