حکومت کا زرداری کیخلاف الیکشن کمیشن میں ریفرنس دائر کرنے کا اعلان

حکومت کا زرداری کیخلاف الیکشن کمیشن میں ریفرنس دائر کرنے کا اعلان
آصف زرداری اثاثے چھپانے پر اب ممبر قومی اسمبلی رہنے کے اہل نہیں رہے، فواد چوہدری۔۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے دعویٰ کیا کہ سابق صدر آصف زرداری کا امریکا میں فلیٹ سامنے آیا ہے جبکہ آئین کے آرٹیکل 62 اور63 کے تحت منتخب نمائندے کو اثاثے بتانے ہوتے ہیں مگر آصف زرداری کی جانب سے جو گوشوارے جمع کرائے گئے ہیں ان میں اس اپارٹمنٹ کا ذکر نہیں۔ لہٰذا پارٹی نے خرم شیر زمان کو ذمہ داری دی ہے کہ زرداری کے خلاف الیکشن کمیشن میں ریفرنس دائر کریں کیونکہ آصف زرداری اثاثے چھپانے پر اب ممبر قومی اسمبلی رہنے کے اہل نہیں رہے۔


وزیر اطلاعات نے اس موقع پر بتایا سابق وزیراعظم نواز شریف اور زرداری اپنے آخری الیکشن لڑ چکے ہیں اور حکومت کو کوئی سیاسی چینلنج درپیش نہیں کیونکہ نواز شریف، شہباز شریف اور سعد رفیق یا پیپلز پارٹی کے لوگوں کے خلاف تحقیقات کا آغاز ان کی اپنی حکومتوں میں ہوا تھا۔ فواد چوہدری نے کہا انہوں نے اپنے دور میں اداروں کو تحقیقات نہیں کرنے دی اور ہم نے آ کر صرف ان اداروں پر سے دباؤ ختم کیا اس لیے اب تحقیقات ہو رہی ہیں جو آزادانہ طور پر آگے بڑھ رہی ہیں۔

فواد چوہدری کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے کرپشن فری سیاسی نظام لانے کا وعدہ کیا تھا اور ہم نے اداروں، تحقیقاتی ایجنسیوں کو فری ہینڈ دیا ہے اور یہ فری ہینڈ تمام جماعتوں کے لیے ہے تاہ، یہ کہتے ہیں تحریک انصاف کے فلاں کی تحقیقات نہیں ہوئی ہم اس سے پہلے وفاقی حکومت میں نہیں رہے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ریاست مدینہ کی رحم کی بنیاد کو آگے لے کر چل رہے ہیں اور حامد انصاری کو اسی بنیاد پر رہا کیا گیا جبکہ کرتار پور راہداری کے موقع پر بھارتی میڈیا نے حامد انصاری کا معاملہ اٹھایا تھا۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ فیصل واوڈا کا اپارٹمنٹ گوشواروں میں ظاہر کیا گیا ہے اور عابد شیر علی نے اپارٹمنٹ کا معاملہ ان دستاویزات سے لیا ہے جو فیصل واوڈا نے جمع کرائی ہوئی ہیں۔