روس، مسلح شخص کی چرچ پر اندھا دھند فائرنگ، 5 خواتین ہلاک

روس، مسلح شخص کی چرچ پر اندھا دھند فائرنگ، 5 خواتین ہلاک

ماسکو: روس میں گرجا گھر پر مسلح شخص نے اندھ دھند فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں 5 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔ روسی میڈیا رپورٹ کے مطابق پولیس حکام کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ روس کے شہر زلار میں 1 مسلح شخص نے آرتھوڈوکس چرچ پر اندھا دھند فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں 5 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔


پولیس کے مطابق حملہ آور ایک خنجر اور رائفل سے لیس تھا۔ ہلاک ہونے والی تمام خواتین تھیں جب کہ زخمیوں میں 2 پولیس افسر شامل ہیں۔ حملہ آور نے چرچ کے باہر موجود افراد پر فائرنگ کی۔ ملزم نے گرجا گھر میں داخل ہونے کی کوشش کی لیکن انتظامیہ نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے چرچ کے دروازے بند کر دیے جس کیوجہ سے وہ اندر داخل نہ ہو سکا ورنہ زیادہ جانی نقصان ہو سکتا تھا۔

واقعے کی اطلاع ملنے پر سیکیورٹی اہلکار جائے وقوعہ پر پہنچے اور جوابی کارروائی کرتے ہوئے حملہ آور کو ہلاک کر دیا۔ پولیس کے مطابق ملزم کی عمر 22 سال تھی تاہم اس کی شناخت جاری نہیں کی گئی ہے۔ دوسری جانب شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ (داعش) نے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا حملہ آور ان کی خلافت کا سپاہی تھا جس کا نام خلیل الداغستانی ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق عسکریت پسند داعش تنظیم کی جانب سے واقعے سے قبل ریکارڈ شدہ حملہ آور کی ویڈیو بھی جاری کی جس میں وہ داعش کے جھنڈے کے ساتھ بیٹھا ہوا ہے۔ واضح رہے کہ روس داعش کے خلاف شام میں فوجی آپریشن کر رہا ہے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں