عمران خان کی حکومت میں ٹرمپ کو بھی پاکستان آتا دیکھ رہا ہوں، شیخ رشید

عمران خان کی حکومت میں ٹرمپ کو بھی پاکستان آتا دیکھ رہا ہوں، شیخ رشید
ق لیگ والے کہیں نہیں جا رہے اور عمران خان ہی امید کے لیے آخری آپشن ہیں، شیخ رشید۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

لاہور: ریلوے ہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ سعودی عرب کے فرمانروا جب پاکستان آئیں گے تو آپ کو پتا چلے گا کہ سرمایہ کاری ہوتی کیا ہے لیکن سعودی عرب سے اتنی سرمایہ کاری دیکھ رہا کہ لوگ حیران رہ جائیں گے۔


وزیر ریلوے نے پیشگوئی کی کہ عمران خان کی حکومت میں امریکی صدر ٹرمپ کو بھی پاکستان آتا دیکھ رہا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ ق لیگ والے کہیں نہیں جا رہے اور عمران خان ہی امید کے لیے آخری آپشن ہیں اور کرپشن کے خلاف عمران خان کے نعرے پر قوم اعتبار کرتی ہے۔ اس وقت ملک میں جو صورت حال ہے اس کے ذمہ دار نواز شریف اور زرداری ہیں۔

شیخ رشید نے مزید کہا کہ اعتزاز احسن اور لطیف کھوسہ سوچیں کہ کیا کیا گیا ملک کے ساتھ جبکہ اعتزاز احسن ، لطیف کھوسہ اور مولابخش چانڈیو کو بلاول کے ساتھ کھڑا ہونا چاہیے۔ مجھے بلاول کی فکر ہے کہ اس کے ساتھ کیا ہو گا اگر بلاول نے سیاست کرنی ہے تو اس کو بھٹو بننا ہو گا۔

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ میں نے ایک ہی آدمی کو این آر او مانگتے دیکھا اور سنا ہے اور اس کا نام شہباز شریف ہے لیکن وہ مرضی کوشش کر لیں این آر او نہیں ملے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ مجھے آئین اور قانون کے تحت کوئی شخص پی اے سی کا رکن بننے سے نہیں روک سکتا اور میرا پبلک اکاونٹس کمیٹی میں جانا لازمی ہے۔ تحریک انصاف اپنے کس رکن کا نام واپس لیتی ہے یہ ان کا مسئلہ ہے اور میں اس وقت پارلیمنٹ میں سب سے زیادہ سینئر اور تجربہ کار ہوں۔