ٹرمپ کے وکلا نے مواخذے کے الزامات امریکی عوام پر حملہ قرار دیدیا

ٹرمپ کے وکلا نے مواخذے کے الزامات امریکی عوام پر حملہ قرار دیدیا

واشنگٹن :مواخذے کے مقدمے میں امریکی صدر کے وکلا نے ڈونلڈ ٹرمپ پر لگائے گئے الزامات کو امریکی عوام پر خطرناک حملہ قرار دے دیا۔


قانونی ٹیم کے مطابق یہ 2020 کے صدارتی انتخابات میں دخل اندازی کی شرمناک کوشش ہے۔امریکی صدر کے وکلا کا مواخذے کے مقدمے پر پہلا ردعمل، ڈونلڈ ٹرمپ کے وکلا کا کہنا ہے کہ صدر پرلگائے گئے الزامات امریکی عوام پر خطرناک حملہ ہیں، قانونی ٹیم کے چھ صفحات پر مشتمل خط میں کہا گیا ہے کہ مواخذے کے آرٹیکلز کوئی بھی جرم عائد کرنے میں ناکام رہے، یہ امریکی صدارتی انتخابات پر اثر انداز ہونے کی شرمناک کوشش ہے۔

امریکی صدر پر اختیارات کے ناجائز استعمال اور ایوانِ نمائندگان کے کام میں مداخلت کرنے کے الزامات عائد کیے گئے ہیں، صدر ٹرمپ نے ان تمام الزامات کو مسترد کرتے ہوئے انھیں صرف افواہ قرار دیا ہے۔

صدر ٹرمپ تیسرے امریکی صدر ہیں جنھیں مواخذے کی کارروائی کا سامنا ہے۔ صدر ٹرمپ کے مواخذے کے مقدمے کا باضابطہ آغاز 21 جنوری سے ہو گا۔

گذشتہ ماہ ایوانِ نمائندگان نے صدر ٹرمپ کے مواخذے کی منظوری دی تھی۔اب ری پبلکن پارٹی کی اکثریت والی سینیٹ نے فیصلہ کرنا ہے کہ انھیں صدر کے عہدے سے ہٹایا جائے گا یا نہیں۔