بھارتی فورسز کی مقبوضہ کشمیر میں جارحیت، مزید 3 نوجوانوں شہید

بھارتی فورسز کی مقبوضہ کشمیر میں جارحیت، مزید 3 نوجوانوں شہید

image by facebook

سری نگر: بھارتی فورسز نے مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مزید 3 نوجوانوں کو شہید کر دیا۔


کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بھارتی فورسز نے ضلع پلوامہ کے علاقے ترال میں سرچ آپریشن کی آڑ میں فائرنگ کر کے تین نوجوانوں کو شہید کر دیا ، کے ایم ایس کے مطابق قابض بھارتی افواج نے ضلع پلوامہ میں ایک گھر بھی تباہ کر دیا۔

کشمیری عوام کی جانب سے بھارتی جارحیت کے خلاف شدید احتجاج بھی کیا گیا جب کہ بھارتی فورسز کی جانب سے مظاہرین پر آنسو گیس شیلنگ بھی کی گئی۔

بھارتی فورسز کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کا ایک اور انتہائی افسوسناک واقعہ سامنے آیا ہے، 

بزدل بھارتی فوجیوں نے پتھراؤ سے بچنے کیلئے 4 کشمیری نوجوانوں کو اپنی گاڑیوں کے سامنے بٹھا لیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک نئی ویڈیو میں دیکھا اور سنا جا سکتا ہے کہ کس طرح مقبوضہ کشمیر میں تعینات بھارتی فوج نے نہتے کشمیریوں سے ڈر کر نوجوان کشمیریوں کو اپنی گاڑیوں کے آگے انسانی ڈھال بنا رکھا ہے۔

بھارتی فوج پوٹا کے کالے قانون کے تحت غیر معمولی اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے تمام بین الاقوامی اور انسانی قوانین کی کھلے عام خلاف ورزیاں کرتی ہے اور ڈھٹائی سے کشمیری نوجوانوں کو ڈھال کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔

 

رواں برس اپریل میں بھی ایک ایسی ہی ویڈیو سامنے آئی تھی جس میں بھارتی فوج کے میجر گوگوئی نے چند مظاہرین کے خوف سے ایک کشمیری نوجوان کو اپنی جیپ کے بونٹ سے باندھ رکھا تھا۔

بعدازاں بھارتی حکومت کی جانب سے میں اُس میجر کو فوجی اعزاز سے بھی نوازا گیا تھا ، بی جے پی کی اُسی حوصلہ افزائی کا ننتیجہ یہ نکلا ہے کہ بھارتی فوج نے کشمیری نوجواں کو ڈھال کو جیسے پالیسی ہی بنا لیا ہے۔