ہائیکورٹ کے رجسٹرار آفس نے سابق گورنر پنجاب کی درخواست پر اعتراض عائد کر دیا

ہائیکورٹ کے رجسٹرار آفس نے سابق گورنر پنجاب کی درخواست پر اعتراض عائد کر دیا

اسلام آباد: اسلام آباد ہائیکورٹ کے رجسٹرار آفس نے سابق گورنر پنجاب عمر سرفراز چیمہ کی اپنی برطرفی سے متعلق درخواست پر اعتراض عائد کر دیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق اسسٹنٹ رجسٹرار اسد خان نے درخواست پر اعتراض عائد کیا ہے کہ یہ معاملہ پنجاب کا ہے اور اس عدالت کا دائرہ کار نہیں بنتا ، متعلقہ دو فریقین کے خلاف یہ درخواست قابل سماعت نہیں ہے۔

واضح رہے کہ سابق گورنر پنجاب عمر سرفراز چیمہ نے عہدے سے ہٹانے کے اقدام کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں وکیل بابر اعوان کے ذریعے درخواست دائر کی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ آئین کے مطابق گورنر صوبے میں صدر کا ایجنٹ ہے اور ایگزیکٹو کا حصہ نہیں ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ گورنر صدر مملکت کی خوشنودی پر عہدے پر قائم رہ سکتا ہے لیکن وزیراعظم شہباز شریف نے اپنے بیٹے حمزہ شہباز کو فائدہ پہنچانے کیلئے مجھے غیر قانونی طور پر عہدے سے ہٹا دیا۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ مجھے عہدے سے ہٹانے کا نوٹیفکیشن بغیر اختیار کے جاری کیا گیا جو خلاف آئین ہے اور اس سے صوبے میں بحران پیدا ہوا۔ 

درخواست میں مزید کہا گیا کہ صوبہ دو ماہ سے بغیر کابینہ کے چل رہا ہے، میری برطرفی کا نوٹیفکیشن غیر قانونی قرار دے کر بطور گورنر عہدے پر بحال کیا جائے جبکہ کابینہ ڈویژن سے جس شخص نے مجھے ہٹانے کا نوٹیفکیشن جاری کیا یا کرایا ان کے خلاف کارروائی کا حکم دیا جائے۔ 

مصنف کے بارے میں