فلم پدماوتی کو نمائش سے روک دیا گیا

انتہاپسندوں نے فلم کی نمائش کے دن یعنی یکم دسمبر کو بھارت بھر میں مظاہرے کرنے اور بڑے پیمانے پر سینما گھروں کو نقصان پہنچانے کی دھمکی دے رکھی تھی، فلم کی ٹیم کو مجبورا ’ پدماوتی ‘ کی نمائش مؤخر کرنا پڑی۔ پدماوتی ‘ کے خلاف ہندو انتہاپسند تنظیموں کی جانب سے گزشتہ 2 سال سے مظاہرے اور احتجاج جاری تھے، تاہم جیسے جیسے فلم کی نمائش کے دن قریب آتے گئے، ان میں شدت آتی گئی۔

انتہاپسندوں نے جہاں شوٹنگ کے دوران بھی فلم کی ٹیم پر حملہ کیا تھا، وہیں انہوں نے فلم کو نمائش کے لیے پیش کیے جانے پر بھارت کی مختلف ریاستوں میں سینما گھروں کو جلانے کی دھمکی بھی دے رکھی تھی۔ ہندو انتہاپسندوں کا سلسلہ صرف سینما گھروں کو جلانے تک محدود نہیں رہا، بلکہ انہوں نے فلم میں پدماوتی کا کردار ادا کرنے والی اداکارہ دپیکا پڈوکون کا ناک کاٹنے کی دھمکی بھی دی۔

ان انتہاپسندوں کا خیال ہے کہ فلم میں راجپوتوں کی رانی پدمنی جسے پدماوتی بھی کہا جاتا تھا، اس کی کہانی کو تبدیل کرکے پیش کیا جائے گا۔ پدماوتی کے خلاف خواتین بھی سڑکوں پر آگئیں۔ان کا خیال ہے کہ فلم میں ’ پدماوتی ‘ کو اپنے شوہر کے علاوہ تیرہویں صدی کے بادشاہ علاؤ الدین خلجی کے ساتھ بھی رومانس کرتے دکھایا جائے گا۔

فلم کی کہانی چتور گڑھ کی رانی پدمنی کے گرد گھومتی ہے جنہیں پدماوتی بھی کہا جاتا ہے، وہ بےحد خوبصورت تھیں۔جن کی خوبصورتی کے چرچے سُن کر اور شیشے میں ان کی ایک جھلک دیکھ کر ظالم بادشاہ علاؤ الدین خلجی ان کا دیوانہ ہوگیا اور انہیں حاصل کرنے کے لیے پدماوتی کے شوہر راجا راول رتن سنگھ کو قتل کردیا۔ فلم میں دپیکا پڈوکون ’پدما وتی‘ شاہد کپور ان کے شوہر راجا راول رتن سنگھ  اور رنویر سنگھ علاﺅ الدین خلجی کے روپ میں نظر آئیں گے۔