جاسوسی کے الزام میں قید پاکستانی کو بھارتی حکام نے رہا کر دیا

جاسوسی کے الزام میں قید پاکستانی کو بھارتی حکام نے رہا کر دیا

نئی دہلی: بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست تلنگانہ کی ورنگل سنٹرل جیل میں قید پاکستانی محمد ارشد کو رہا کردیا گیا۔ جیل حکام نے محمد ارشد کو ریاستی دارالحکومت حیدرآباد کی پولیس کے حوالے کردیا۔ تفصیلات کے مطابق بھارت نے جاسوسی کے الزام میں قید پاکستانی ارشد محمد کو رہا کردیا جنہیں واہگہ بارڈر پر حوالے کیا جائے گا۔ ارشد محمد کو 2009 میں پاکستان کے لیے جاسوسی کرنے اور غداری کے الزام میں گرفتار کرکے عمر قید کی سزا سنائی گئی تھی۔


بھارتی حکام نے کہا کہ ارشد محمد کی سزا گزشتہ سال 16 اگست کو مکمل ہوگئی تھی اور انہیں واپس پاکستان جانے کی اجازت دے دی گئی تھی لیکن پاکستانی حکومت نے اس کیس پر کوئی ردعمل ظاہر نہیں کیا جس کے نتیجے میں دستاویزی عمل تاخیر کا شکار ہونے کی وجہ سے ارشد محمد کو مزید ایک سال جیل میں گزارنا پڑا۔

ارشد محمد نے بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج سے واپس پاکستان بھجوانے کی اپیل کی جس پر بھارتی وزارت خارجہ نے انہیں واہگہ بارڈر پر پاکستانی حکومت کے حوالے کرنے کا حکم جاری کیا۔ جیل سے باہر نکلنے کے بعدارشد نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ وہ ریڑھ کی ہڈی کے اور دمہ کے مریض بن چکے ہیں۔