بنگلہ دیش نے روہنگیا پناہ گزینوں کی کشتی واپس بھیج دی

بنگلہ دیش نے روہنگیا پناہ گزینوں کی کشتی واپس بھیج دی

ڈھاکہ :اہم اسلامی ملک نے مسلم ملک کے لوگوں پر پابندی لگا دی تفصیلات کے مطابق بنگلہ دیش نے روہنگیا پناہ گزینوں کی کشتی واپس بھیج دی، پناہ کے طلبگاروں میں 18 مرد، نو خواتین اور چار بچے تھے جن میں دو افراد زخمی بھی تھے۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق بنگلہ دیش میں کوسٹ گارڈ نے ایک ایسی کشتی کو ملک میں داخل نہیں ہونے دیا جس میں 31 روہنگیا مسلمان میانمار میں حالیہ فوجی کارروائیوں سے بچ کر پناہ لینے کے آئے تھے۔

یہ ردِعمل اس وقت سامنے آیا ہے جب حال ہی میں میانمار کی ریاست روخائن سے کم از کم 500 روہنگیا افراد بنگلہ دیش کے جنوب مشرقی ضلع کوکس بازار کے پہاڑی علاقوں اور پناہ گزین کیمپوں میں آئے ہیں۔کوسٹ گارڈ کو یہ کشی ناف دریا میں ملی جو کہ میانمار اور بنگلہ دیش کے درمیان سرحد ہے۔ کشتی پر موجود پناہ گزینوں میں خواتین اور بچے بھی موجود تھے۔

کوسٹ گارڈ کے ترجمان شیخ فخر نے کے مطابق کشتی پر موجود پناہ گزینوں نے بتایا کہ وہ تشدد سے بھاگ کر آئے ہیں۔ حکام کے مطابق پناہ کے طلبگاروں میں 18 مرد، نو خواتین اور چار بچے تھے جن میں دو افراد زخمی بھی تھے۔ شیخ فخر نے افسوس کے ساتھ کہا کہ پھر بھی ہمیں انھیں واپس بھیجنا پڑا۔

یاد رہے کہ پناہ گزینوں کی حالیہ بڑھتی ہوئی تعداد کی وجہ کئی ماہ سے جاری میانمار میں فوجی کارروائی ہے جس میں ملک کی مسلمان اقلیت کے خلاف کریک ڈان جاری ہے۔ اقوام متحدہ کہہ چکی ہے کہ یہ کارروائی نسل کشی کے مترادف ہے۔