"تیل کے بدلے خوراک" ایران کا روس کیساتھ انوکھا معاہدہ

تہران:ایرانی میڈیا کے مطابق روس کے وزیر توانائی الیگزینڈر نوواک نے ایران کے ساتھ ایک معاہدے کا اعلان کی ہے جس میں "تیل کے بدلے خوراک" کی ڈیل بھی شامل ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایران اور روس کے درمیان ہونے والے اس معاہدے پر عمل درامد آئندہ ماہ ہو گا جس کے تحت ایران سے روزانہ ایک لاکھ بیرل خام تیل خریدا جائے گا۔اس ڈیل سے متعلق قانونی دستاویزات اپنے حتمی مراحل میں ہیں۔دوسری طرف روسی میڈیا نے اس خبر کی تصدیق کی ہے کہ تیل کے بدلے خوراک کے اس معاہدے کے تحت روزانہ ایک لاکھ ایرانی تیل کی فروخت عمل میں آئے گی ، یہ مقدار ایک سال کے اندر 50 لاکھ ٹن کے قریب بنتی ہے۔

روسی میڈیا کے مطابق ایران میں روسی تجارت کے نمائندے آندرے لوگانسکی نے بتایا ہے کہ اس پروگرام کے تحت ماسکو ایک سال کے اندر 45 ارب ڈالر کا سامان تہران برآمد کرے گا۔

یاد رہے کہ ایران میں کئی نمایاں اصلاح پسند شخصیات تہران کے ماسکو کے ساتھ اتحاد کو شدید تنقید کا نشانہ بنا رہی ہیں۔ ان کے نزدیک ایرانی نظام مکمل صورت میں روس کے تابع ہو گیا ہے۔ ۔