نقیب اللہ کو کبھی نہیں ملا اور نہ ہی جانتا ہوں، گرفتار دہشتگرد قاری احسان کا بیان

نقیب اللہ کو کبھی نہیں ملا اور نہ ہی جانتا ہوں، گرفتار دہشتگرد قاری احسان کا بیان

کراچی: مبینہ پولیس مقابلے میں نقیب اللہ محسود کی ہلاکت کے معاملے میں انکوائری کمیٹی کی تحقیقات جاری ہیں۔ ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی ثناء اللہ عباسی اور ڈی آئی جی ایسٹ سلطان خواجہ سمیت 4 رکنی انکوائری ٹیم نے سینٹرل جیل میں قید کالعدم تنظیم کے دہشتگرد قاری احسان سے تفتیش کی۔ ذرائع کے مطابق قاری احسان سے تفتیش راؤ انوار کے اس بیان پر کی گئی کہ نقیب اللہ قاری احسان کا ساتھی ہے۔


ذرائع کے مطابق انکوائری کمیٹی نے 45 منٹ تک مختلف زاویوں سے قاری احسان سے تفتیش کی اور اسے نقیب اللہ کی مختلف تصاویر دکھائی گئیں تاہم قاری احسان کا کہنا تھا کہ میں نقیب اللہ کو نہیں جانتا اور نہ اس سے ملا۔ قاری احسان نے انکوائری ٹیم کو اپنے بیان میں کہا کہ میں نے تحریک طالبان کی کسی مجلس یا محفل میں بھی نقیب اللہ کو نہیں دیکھا تھا۔

دوسری جانب مبینہ پولیس مقابلے میں نقیب اللہ محسود کی ہلاکت کے معاملے میں سی ٹی ڈی حکام نے تحقیقات میں میڈیا کی معاونت طلب کر لی ہے۔

سی ٹی ڈی کے ایڈیشنل آئی جی ایڈمن نے نیوز چینل حکام کو خط لکھا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ نقیب کی ہلاکت کے معاملے پر آئی جی سندھ کی بنائی گئی کمیٹی تحقیقات کر رہی ہے۔ میڈیا اس ضمن میں تمام تر دستیاب ڈیٹا، ویڈیوز اور رپورٹ سی ٹی ڈی کو فراہم کرے۔

خط میں میڈیا سے درخواست کی گئی ہے کہ ٹی وی چینلز جلد از جلد تمام ڈیٹا فراہم کریں تا کہ انکوائری میں حقائق سامنے آ سکیں۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں