ناقص دودھ کی سپلائی کے خلاف کریک ڈاؤن، 24842 لیٹر دودھ تلف

 ناقص دودھ کی سپلائی کے خلاف کریک ڈاؤن، 24842 لیٹر دودھ تلف

لاہور: دن کا اجالا ہو یا رات کا اندھیرا، ملاوٹ مافیا کے گرد پنجاب فوڈ اتھارٹی کاگھیراہر آتے دن مزید تنگ ہو رہا ہے۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی ٹیموں نے ڈی جی فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل کی سربراہی میں مختلف شہروں میں ناقص دودھ کے خلاف کریک ڈاؤن کیا اور شہروں کے تمام داخلی مقامات پر ناکے لگا کر دودھ کی چیکنگ کی گئی۔لاہور میں 112 گاڑیوں میں موجود 54 ہزار لیٹر دودھ کی چیکنگ کی گئی اور ملاوٹ ثابت ہونے پر 8190 لیٹر ناقص دودھ تلف کر دیا گیا۔فیصل آباد میں 72 گاڑیوں کی چیکنگ، 4772 لیٹر ناقص دودھ تلف کر کے ناقص دودھ لانے والوں کو وارننگ نوٹس نوٹس جاری کیے گئے۔


گوجرانوالہ میں 81 گاڑیوں کی چیکنگ کے دوران 5890 لیٹر ناقص دودھ ،ملتان میں 67 گاڑیوں کی چیکنگ کے دوران 2870 لیٹر ناقص دودھ تلف جبکہ راولپنڈی میں 54 گاڑیوں کی چیکنگ کے دوران 3120 لیٹر ناقص دودھ تلف کیا گیا۔مختلف شہروں میں مجموعی طور پر 386 گاڑیوں میں موجود تقریبا 3 لاکھ لیٹر دودھ چیک کیا گیا اور کل 24842 لیٹر ناقص دودھ تلف کیا گیا۔ ناکوں کی نگرانی ڈی جی فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل، ڈائریکٹر آپریشنز سنٹرل رافیعہ حیدر اور ڈائریکٹر آپریشنز نارتھ بلاول ابڑو نے کی۔

ڈی جی فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل نے بتایا کہ دودھ میں گاڑھا کرنے والے کیمیکل اور ملائی کے لیے ویجیٹیبل فیٹ کی ملاوٹ پائی گئی۔ اگلے مرحلے میں کھلے دودھ کی فروخت پر پابندی لگانے کی قانون سازی کر رہے ہیں۔جب تک کھلا دودھ بکے گا، ملاوٹ ہوتی رہے گی۔ ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے مز ید کہا کہ پاسچرائز دودھ بوتلوں میں بند کر کے فروخت کرنے سے ناصرف ملاوٹ کا خاتمہ اور فارمر کو دوگنا فائدہ ہو گا۔بند بوتلوں میں ملاوٹ پائے جانے پر ملاوٹ کرنے والے کا فوری سراغ لگایا جا سکے گا۔

نیوویب ڈیسک< News Source