سندھ بھر میں 21 جون سے عملی طور پر تدریسی عمل شروع کرنے کا فیصلہ 

سندھ بھر میں 21 جون سے عملی طور پر تدریسی عمل شروع کرنے کا فیصلہ 
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

کراچی: محکمہ تعلیم سندھ نے صوبے بھر کے تعلیمی اداروں میں عملی طور پر تدریسی عمل شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے اور 21 جون بروز پیر سے صوبے بھر کے تمام سکولوں میں تعلیمی عمل مکمل طور پر بحال ہو جائے گا۔ 

تفصیلات کے مطابق سندھ کورونا ٹاسک فورس کے اجلاس میں صوبے بھر کے تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل بحال کرنے کا فیصلہ کیا گیا جس کے بعد محکمہ تعلیم سندھ کی جانب سے نوٹیفکیشن بھی جاری کیا جا چکا ہے۔ نوٹیفکیشن کے مطابق 21 جون بروز پیر سے تمام سرکاری و نجی سکولوں میں پرائمری تا پانچویں جماعت میں عملی طور پر تدریسی عمل کا آغاز ہو گا۔ 

سندھ کورونا ٹاسک فورس کی جانب سے کئے گئے فیصلے اور اس حوالے سے محکمہ تعلیم سندھ کی جانب سے جاری کئے گئے نوٹیفکیشن کے مطابق تعلیمی ادارے 50 فیصد حاضری اور ایس او پیز کے ساتھ عملی طور پر کلاسز لے سکیں گے جبکہ تدریسی و غیر تدریسی عملے کیلئے کورونا ویکسی نیشن لازمی قرار دی گئی ہے۔ 

واضح رہے کہ پہلے مرحلے میں سندھ بھر میں 7 جون کو نویں سے بارہویں اور جامعات میں عملی طور پر تدریسی عمل کا آغاز ہوا تھا جبکہ دوسرے مرحلے میں چھٹی جماعت سے آٹھویں جماعت میں عملی طور پر تعلیمی عمل 15 جون سے بحال ہوا تھا۔