مغربی دنیا میں ”طلاق سیلفی“ کا رجحان بڑھنے لگا

لندن: مغربی دنیا میں طلاق ایک معمولی سا عمل نظر آتا ہے یہی وجہ ہے کہ امریکا سمیت کئی ممالک میں طلاق کو خوشگوار رنگ دینے کے لیے ایک دوسرے سے الگ ہونے والے جوڑے خوشی خوشی آخری بار سیلفی لے کر اسے پوسٹ کررہے ہیں۔

مغربی دنیا میں ”طلاق سیلفی“ کا رجحان بڑھنے لگا

لندن: مغربی دنیا میں طلاق ایک معمولی سا عمل نظر آتا ہے یہی وجہ ہے کہ امریکا سمیت کئی ممالک میں طلاق کو خوشگوار رنگ دینے کے لیے ایک دوسرے سے الگ ہونے والے جوڑے خوشی خوشی آخری بار سیلفی لے کر اسے پوسٹ کررہے ہیں۔


ماہرین کا خیال ہے کہ سوشل میڈیا پر یہ ایک نیا رحجان ہے جس کے ذریعے لوگ یہ کہنا چاہ رہے ہیں کہ طلاق اگرچہ ایک مشکل فیصلہ ہوتا ہے جس کے نفسیاتی اور جسمانی منفی اثرات بھی مرتب ہوتے ہیں لیکن اس کے بعد بھی زندگی میں بہتری کی گنجائش رہتی ہے۔دلچسپ بعد یہ ہے کہ سیلفی پوسٹ کرتے وقت میاں بیوی ایک دوسرے کی اچھی عادات اور اچھے لمحات کا ذکر بھی کررہے ہیں۔ کینیڈا کے ایک شہر میں سابقہ میاں بیوی نے طلاق کی دستاویز کے ساتھ لکھا کہ ”ہم نے احترام، غوروفکراورباہمی رضامندی سے الگ ہونے کا فیصلہ کیا ہے، اب ہمیں اپنے بچوں کی پرورش کا سوچنا ہے“۔