نیوزی لینڈ نے پاکستان کو 8 وکٹوں سے شکست دے دی

نیوزی لینڈ نے پاکستان کو 8 وکٹوں سے شکست دے دی

نیوزی لینڈ : کرائسٹ چرچ میں کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ میچ میں نیوزی لینڈ نے مہمان پاکستان کرکٹ ٹیم کو 8 وکٹوں سے شکست دے دی۔ پہلے ٹیسٹ میچ میں پاکستان کرکٹ ٹیم کی کارکردگی انتہائی مایوس کن رہی، پاکستان کی جانب سے نیوزی لینڈ کو فتح کے لیے محض 105 رنز کا ہدف ملا جو اس نے دو وکٹوں کے نقصان پر باآسانی پورا کرلیا۔


میچ کے چوتھے روز کھیل آغاز ہوا تو پاکستان کی جانب سے اسد شفیق اور سہیل خان نے دوسری اننگز دوبارہ شروع کی، تاہم سہیل خان 40 رنز بناکر ٹم ساؤتھی کا شکار بن گئے۔اس کے بعد اسد شفیق 17 رنز اور راحت علی صرف 2 رنز بناکر پولین لوٹ گئے جب کہ یاسر شاہ 6 رنز کے ساتھ ناٹ آؤٹ رہے۔ یہ بھی پڑھیں: نیوزی لینڈ کے خلاف پاکستان مشکلات کا شکار

نیوزی لینڈ کی جانب سے ٹرینٹ بولٹ، ٹم ساؤتھی اور وینگر نے تین تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جبکہ گرینڈ ہوم نے ایک وکٹ حاصل کی۔یوں نیوزی لینڈ کو جیت کے لیے محض 105 رنز کا ہدف ملا جو اس نے 31.3 اوورز میں دو وکٹوں کے نقصان پر پورا کرلیا۔دو ٹیسٹ میچز کی سیریز میں نیوزی لینڈ کی ٹیم کو ایک صفر کی ناقابل شکست برتری حاصل ہوگئی۔جیت راول 36 اور کین ولیم سن 61 رنز بناکر نمایاں رہے جبکہ پاکستان کی جانب سے محمد عامر اور اظہر علی نے ایک ایک کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

میچ کے بہترین کھلاڑی کا اعزاز ڈیبیو کرنے والے فاسٹ بولر گرینڈ ہوم کے نام رہا جنہوں نے میچ میں مجموعی طور پر 7 وکٹیں حاصل کیں۔واضح رہے کہ نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا تھا اور بارش کی وجہ سے پہلے دن کا کھیل نہیں ہوسکا تھا یوں یہ ٹیسٹ میچ عملی طور پر 4 دنوں پر مشتمل تھا۔پاکستان کو پہلی اننگز میں بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تھا اور پوری ٹیم محض 133 رنز بناکر پویلین لوٹ گئی تھی، مصباح الحق 31 رنز بناکر ٹاپ اسکورر رہے تھے جبکہ پاکستان کے 7 کھلاڑی دہرا ہندسہ بھی عبور نہیں کرسکے تھے۔

گرینڈ ہوم پہلی اننگز میں پاکستان کے لیے تباہ کن ثابت ہوئے تھے اور انہوں نے 6 پاکستانی کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی تھی۔اس کے جواب میں نیوزی لینڈ کی ٹیم بھی 200 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی تھی اور روال 55 رنز بناکر نمایاں رہے تھے۔ عالمی درجہ بندی میں دوسرے نمبر پر فائز پاکستان نے ٹیسٹ کرکٹ میں نیوزی لینڈ کے خلاف 30 سال سے زائد عرصے سے بالادستی قائم کر رکھی ہوئی ہے اور کیویز اس عرصے میں کسی بھی ٹیسٹ سیریز میں پاکستانی ٹیم سے فتح نہ چھین سکے۔

نیوزی لینڈ نے آخری مرتبہ 1985 میں پاکستان کے خلاف سیریز میں فتح حاصل کی تھی لیکن اس کے بعد کامیابی ان سے روٹھ گئی اور پاکستان نے پانچ ٹیسٹ سیریز میں فتح حاصل کی جبکہ تین ٹیسٹ سیریز ڈرا ہوئیں۔یہ ٹیسٹ میچ قومی ٹیم کے کپتان مصباح الحق کے لیے بھی یادگار تھا اور یہ بطور کپتان ٹیسٹ کرکٹ میں ان کا 50 واں ٹیسٹ میچ تھا ، وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والے دنیا کے 16 ویں کپتان ہیں۔