18 ارب ڈالر کا خسارہ ،7 سے 8 ماہ میں ڈالر کی قدر میں 26 ،27فیصد کمی ہوگی :اسد عمر

18 ارب ڈالر کا خسارہ ،7 سے 8 ماہ میں ڈالر کی قدر میں 26 ،27فیصد کمی ہوگی :اسد عمر
سکرین شاٹ

کراچی :وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا ہے کہ 18 ارب ڈالر کا خسارہ ہے، تیزی سے دیوالیہ ہونے جارہے تھے جبکہ اس سال12 ارب ڈالر کا فنانسنگ گیپ ہے۔وزیرخزانہ اسد عمر کا کہنا ہےکہ یہ آئی ایم ایف کا آخری پروگرام ہوگا اور میڈیا میں معیشت پر بہت طوفان نظر آرہا ہے مگر ایسا نہیں اور کوئی ایسی خطرے کی گھنٹی نہیں بج رہی۔


تفصیلات کے مطابقپاکستان سٹاک ایکسچینج کراچی میں بروکرز سے گفتگو کرتے ہوئے وزیرخزانہ اسد عمر نے کہا کہ پاکستان سٹاک ایکسچینج کے لیے بھر پور اقدامات ہوں گے، اسٹاک مارکیٹ میں بہترین گروتھ ہے، بہترین نتائج کے لیے محنت جاری رکھنی چاہیے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ مارکیٹ میں سرمایہ کاری ٹیکسیشن کی وجہ سے کم ہے تواسے ٹھیک ہوناچاہیے،ستمبر میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ کم ہوگا،7 سے 8 ماہ میں ڈالر کی قدر میں 26 ،27فیصد کمی ہوگی جبکہ امپورٹرزنے روپے کی قدرکم ہونے سے انونٹری پراربوں روپے کمائے۔

اسد عمر نے مزید کہا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ کم ہونا شروع ہوگیا ہے،امپورٹرز نے اتنا پیسا کمایا جس کی کوئی حد نہیں ہے، کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ اڑھائی ارب ڈالر سے بڑھ کر18 ارب ڈالر ہوگیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کاروبار کرنا بہت مہنگا کردیا ہے، 18 ارب کا خسارہ ہے، تیزی سے دیوالیہ ہونے جارہے تھے۔

ہمارے منشور میں ایز آف ڈوئیگ بزنس شامل ہے، میڈیا میں معیشت پر بہت طوفان نظر آرہا ہے ، ایسا نہیں ہے کوئی ایسی خطرے کی گھنٹی نہیں بج رہی اوررئیل اسٹیٹ مارکیٹ کا انتظام سٹاک مارکیٹ کی طرح ہونا چاہیے۔