ارفاکریم ٹاوردھماکے میں کون ٹارگٹ تھا ، آئی ایس پی آر نے بتا دیا

ارفاکریم ٹاوردھماکے میں کون ٹارگٹ تھا ، آئی ایس پی آر نے بتا دیا

اسلام آباد: ڈی جی آئی ایس پی آرمیجر جنرل آصف غفور نے میڈیا کے نمائندوں کو  بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ خیبر فور آپریشن آج مکمل ہوگیاہے۔خیبر 4آپریشن 15 جولائی کو شروع کیا گیا تھا ،یہ آپریشن بہت مشکل تھا, اس آپریشن کے دوران  2سپاہی شہید اور 6زخمی ہوئے۔خیبر ویلی میں کلیئرنس آپریشن جاری ہے ۔آپریشن خیبر 4میں 253 کلومیٹر کا علاقہ کلیئر کرایا گیا ہے۔


میجر جنرل آصف غفور  کا مزید کہنا ہے کہ 31دہشت گرد زخمی ،ایک گرفتار  جبکہ 4نے خود کو حوالے کیا۔ راجگال اور شوال میں زمینی اہداف حاصل کرلیے گئے ہیں۔آپریشن کے دوران 52 دہشت گردہلاک اور 31 زخمی ہوئے۔آپریشن میں تیار آئی ای ڈیز بھی برآمد ہوئیں، آئی ای ڈی بنانے کے ایک مواد پر میڈ ان انڈیا کا لیبل ہے ۔ راجگال اور شوال میں ایک ایک دہشتگرد ہمارے نشانے پر تھا، آپریشن کے دوران سیکڑوں بارودی سرنگیں ناکارہ بنائی گئیں ۔انہوں نے کہا کہ خیبر ویلی میں کلیئرنس کا عمل جاری ہے، راجگال وادی میں 91چیک پوسٹ بنا دی گئی ہیں، خیبر فور آپریشن کیلیے افغان سیکیورٹی فورسز سے بھی تعاون لیا گیا۔

میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ اب تک 124ہزار آپریشن پورے پاکستان میں کر چکے ہیں۔ 2017 میں کراچی میں دہشت گردی کا ایک واقعہ پیش آیا،پولیس مضبوط ہوگی تو اسٹریٹ کرائم میں وقت کےساتھ کمی آئے گی ۔  پنجاب میں انٹیلی جنس اطلاعات پر 1728 آپریشن کیے گئے ،خیبرفور آپریشن میں افغان فورسز سےمشاورت بھی کی گئی۔ آپریشن ردالفساد کے تحت ملک بھرمیں3300آپریشن کیےگئے۔ فاٹا کے بہت سے کیڈٹس پاک فوج میں تربیت لے رہے ہیں ۔فاٹا میں نوجوانوں کی رجسٹریشن کی جائے گی،فاٹا میں 147اسکول ،17ہیلتھ یونٹس ،27مساجد قائم کی گئی ہیں ، آپریشن شروع ہوا تو فاٹا کے بہت سے لوگ آئی ڈی پیز بن گئے۔

میجر جنرل آصف غفور رکا مزید کہنا ہے کہ راولپنڈی میں 2013 کے دوران مسجد پر حملے کا نیٹ ورک پکڑا گیا ،راولپنڈی میں مسجدمیں آگ لگانےوالوں کامقصدفرقہ واریت کوہوادیناچاہتےتھے۔راولپنڈی میں مسجد پر حملہ کرنےوالے اسی مسلک کے تھے ۔ پریس کانفرنس کے دوران کالعدم تحریک طالبان باجوڑ کے دہشت گرد اجمل خان کا وڈیوبیان بھی دکھایا گیا۔ارفع کریم ٹاور لاہور میں خودکش حملہ آور کا ٹارگٹ وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف تھے۔

نیوویب ڈیسک< News Source