انجینئروں نے ایسا ریفریجریٹر بناڈالا کہ سن کر کنجوس لوگوں کی خوشی کی انتہا نہ رہے گی

ٹوکیو: اگر آپ بجلی کی لوڈشیڈنگ سے پریشان ہیں تو خوش ہوجائیے کہ جاپانی سائنسدانوں نے ایک ایسا ریفریجریٹر تیار کرلیا ہے جسے چلانے کے لئے بجلی کی نہیں بلکہ آواز کی لہروں کی ضرورت ہوگی۔

انجینئروں نے ایسا ریفریجریٹر بناڈالا کہ سن کر کنجوس لوگوں کی خوشی کی انتہا نہ رہے گی

ٹوکیو:  اگر آپ بجلی کی لوڈشیڈنگ سے پریشان ہیں تو خوش ہوجائیے کہ جاپانی سائنسدانوں نے ایک ایسا ریفریجریٹر تیار کرلیا ہے جسے چلانے کے لئے بجلی کی نہیں بلکہ آواز کی لہروں کی ضرورت ہوگی۔


ویب سائٹ یو پی آئی کی رپورٹ کے مطابق یہ منفرد ریفریجریٹر ٹوکائی یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے تیار کیا ہے۔ سائنسدانوں نے اس ریفریجریٹر میں تھرمو اکوسٹک انجن نامی ٹیکنالوجی استعمال کی ہے جو آواز کی لہروں کو توانائی میں بدلتی ہے۔ تھرمو اکوسٹک انجن میں داخل ہونے والی آواز کی لہریں پہلے حرارت میں تبدیل ہوتی ہیں اور پھر اس حرارت کو برقی توانائی میں تبدیل کیا جاتا ہے۔ اس ٹیکنالوجی میں حرکت کرنے والا کوئی بھی پرزہ استعمال نہیں ہوتا اور توانائی کی دیگر اقسام کی نسبت اسے بہتر کارکردگی کا حامل اور ماحول دوست بھی قرار دیا گیا ہے۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ تھرمواکوسٹک انجن صنعتوں سے خارج ہونے والی فاضل حرارت کو بھی توانائی میں تبدیل کرسکتا ہے اور اسی طرح گاڑیوں سے خارج ہونے والی حرارت سے بھی توانائی پیدا کرسکتا ہے۔ ماہرین اس ٹیکنالوجی پر تجربات جاری رکھے ہوئے ہیں تاکہ اسے ریفریجریشن کے علاوہ دیگر کاموں کے لئے بھی استعمال کیا جاسکے۔