امریکا نے فوجی واپس نہ بلائے تو طالبان اہم فیصلہ کریں گے، ملا بردار

 امریکا نے فوجی واپس نہ بلائے تو طالبان اہم فیصلہ کریں گے، ملا بردار
کیپشن:   امریکا نے فوجی واپس نہ بلائے تو طالبان اہم فیصلہ کریں گے، ملا بردار سورس:   فائل فوٹو

کابل: نئی امریکی حکومت کو طالبان قیادت نے خبردار کرتے ہوئے کہ اگر امریکا نے فوجی واپس نہ بلائے تو پھر طالبان اہم فیصلہ کریں گے۔ افغان میڈیا کے مطابق طالبان کے نائب سربراہ ملا بردار نے ایک انٹرویو میں کہا کہ دوحہ میں امریکا کے ساتھ ہونے والا امن معاہدہ ابھی تک مثبت سمت میں جا رہا ہے اور معاہدے کے مطابق امریکا نے چودہ ماہ کے اندر تمام افواج واپس بلانی ہے اور ابھی تک امریکا پانچ ملٹری بیس خالی کر چکا ہے اور فوجیوں کی تعداد 8600 تک کم ہو گئی ہے۔ 

ملا برادر نے کہا فوجیوں کے انخلا کا عمل جاری ہے لیکن غیر ملکی افواج کا مقررہ وقت پر افغانستان سے انخلاف مکمل نہ ہونے کی صورت میں ہمیں اہم اور ضروری فیصلے کرنا پڑٰیں گے۔

انہوں نے افغان حکومت پر بھی زور دیا کہ طالبان قیدیوں کی رہائی جلد از جلد عمل میں لائی جائے تاکہ مذاکرات کا راستہ ہموار ہو سکے۔ 

خیال رہے کہ گزشتہ روز جوبائیڈن نے امریکا کے 46ویں صدر کی حیثیت سے حلف اٹھایا جس کے بعد جوبائیڈن کی جانب سے جنوبی ایشیائی ممالک بالخصوص افغانستان کیلئے نئی پالیسی کا اعلان بھی متوقع ہے۔