دوکھلم معاملہ پر بھوٹان کی مکمل خاموشی نے بھارتی سازش بے نقاب کر دی، غیر ملکی میڈیا

دوکھلم معاملہ پر بھوٹان کی مکمل خاموشی نے بھارتی سازش بے نقاب کر دی، غیر ملکی میڈیا

لندن: دوکھلم معاملہ پر بھوٹان کی مکمل خاموشی نے بھارتی سازش بے نقاب کر دی، متنازعہ علاقہ کا براہ راست تعلق چین اور بھوٹان کے درمیان ہے، تنازعہ میں بھارت بن بلایا مہمان بن گیا۔


غیر ملکی میڈیا سے بات چیت کے دوران بھوٹان کے جنوب مشرقی حصے میں واقع ایک شہر میں برسوں سے کاروبار کرنے والے زیادہ تر انڈین شہریوں کا کہنا ہے کہ سرحدی تنازع پر انڈیا اور چین کے درمیان کشیدگی سے متعلق خبروں پر یہاں کوئی بات چیت نہیں کرتا ہے، اس لیے ایسا محسوس ہی نہیں ہوتا   کہ انڈیا اور چین کے درمیان کچھ چل رہا ہے۔

بی بی سی کے مطابق جب بھوٹان اس معاملہ پر پوری طرح خاموش دکھائی دیتا ہے تو بھارت کا یہ کہنا کہ بھوٹان کے کہنے پر بھارت نے اپنی افواج یہاں جمع   کیں اور  چین کے ساتھ سرحدی تنازعہ کھڑا   کیا یہ سب بے بنیاد   لگتا ہے۔

بھوٹان میں موجود بھارتی تاجر سریش اگروال نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا    کہ یہاں زندگی اچھی چل رہی ہے۔ کسی طرح کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ چین کے ساتھ تنازع کو لے کر ہمارے یہاں کسی طرح کا ہنگامہ نہیں ہے۔ بھوٹان میں موجود بھارتیوں کو رہتے 50سال سے زائد عرصہ گذر چکا ہے لیکن کسی بھارتی کے پاس گھر یا دکان کے مالکانہ حقوق نہیں ہیں۔

بھوٹان اب ایک جمہوری ملک ہے لیکن یہاں آج بھی بادشاہت کا اثر زیادہ لگتا ہے۔ یہاں کے لوگ اپنے ملک کے بارے میڈیا سے کھل کر بات نہیں کرتے۔ یہاں ہر دکان کے اندر بادشاہ کی تصویر لگانا لازمی ہے۔

نیوویب ڈیسک< News Source