جعلی ووٹ ڈالنے والے کو دو سال قید کی سزا ہو گی، الیکشن کمیشن

جعلی ووٹ ڈالنے والے کو دو سال قید کی سزا ہو گی، الیکشن کمیشن

اسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان نے فیصلہ کیا ہے کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار انتخابات کے دوران ٹینڈر ووٹ بھی گنے جائیں گے اور جعلی ووٹ ڈالنے والے کو دو سال قید کی سزا ہو گی۔


الیکشن کمیشن کے مطابق انتخابات 2018 میں ٹینڈر ووٹ کی بھی گنتی ہو  گی۔ کسی اور کے نام پر ووٹ کاسٹ ہونے پر اصلی اور جعلی دونوں ووٹ گنے جائیں گے، تاہم ٹینڈر ووٹ کے لیے الگ بیلٹ باکس ہو  گا۔ ووٹنگ کے نتائج جاری ہونے کے بعد معاملہ تحقیقات کے لیے نادرا کو بھجوایا جائے گا جہاں پر انگوٹھے کے نشان سے معلوم کیا جائے گا   کہ جعل سازی کس شخص نے  کی۔تحقیقات کے بعد جعلی ووٹ ڈالنے اورجعل سازی کرنےوالے شخص کو  2 سال جیل  کی سزا  ہو گی۔

الیکشن کمیشن نے ریٹرننگ افسران کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ فیصلہ مجبوری کے تحت کیا، اس کے ذمہ دار پارلیمنٹیرینز ہیں۔ انتخابات والے دن اگر کوئی شخص ووٹ ڈالنے آئے اور پتہ چلے کہ اس کا ووٹ پہلے ہی جعل سازی سے ڈالا جاچکا ہے، تو پریزائڈنگ افسر اس ووٹر کو ووٹ ڈالنے کی اجازت دے سکتا ہے۔ ایسے ووٹ کو ٹینڈر ووٹ کہا جاتا ہے۔ پریزائڈنگ افسر اس ووٹ کو بیلٹ باکس کے بجائے خصوصی ٹینڈر بیلٹ پیکٹ میں ڈالے گا۔