ملک میں بین الاقوامی کرکٹ بحران کے باوجود پی سی بی کو اربوں روپے کا منافع

اسلام آباد:   پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ نہ ہونے کے باوجود پاکستان کرکٹ بورڈ  ( پی سی بی )  اربوں روپے کا منافع کمانے لگا۔

پی سی بی کے گذشتہ 5 برس میں ہونے والی آمدنی اور بورڈ کی جانب سے کیے جانے والے اخراجات کی تفصیلات کے مطابق پی سی بی کی کل آمدنی 16 ارب 11 کروڑ روپے سے زائد رہی جبکہ پی سی بی نے 2012 سے 2016 تک 12 ارب 38 کروڑ روپے سے زائد کے اخراجات بھی کیے۔

دستاویزات کے مطابق پی سی بی کو 2013 سے 2015 کے دوران بیرون ملک میچز سے 21 کروڑ روپے سے زائد کی آمدن ہوئی جبکہ گذشتہ 5 برسوں کے دوران ملک میں اور نیوٹرل مقامات پر میچز سے مجموعی طور پر 6 ارب 9 کروڑ روپے سے زائد کی آمدن ہوئی۔

دستاویزات میں بتایا گیا ہے کہ 2012 سے 2016 تک بین الاقوامی کرکٹ ٹورنامنٹس کے انعقاد سے پی سی بی نے 6 ارب 60 کروڑ روپے سے زائد کمائے۔ملک میں بین الاقوامی کرکٹ سے محرم رہنے کے باوجود پی سی بی کو اسپانسرشپ اور دیگر آمدن مد میں 3 ارب 20 کروڑ روپے سے زائد کی کمائی ہوئی۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کے بیرون ملک دوروں پر پچھلے 5 سالوں میں 1 ارب 7 کروڑ روپے کے اخراجات کیے گئے جبکہ پاکستان میں اور نیوٹرل مقامات پر میچز کے انعقاد پر 2 ارب 54 کروڑ روپے سے زائد کے اخراجات ہوئے۔

ملک میں قومی سطح کے ٹورنامنٹس کے انعقاد پر 3 ارب 6 کروڑ روپے سے زائد کے اخراجات ہوئے جبکہ پی سی بی نے 5 برس میں 3 ارب 23 کروڑ روپے سے زائد کے انتظامی اخراجات بھی کیے۔

دستاویزات کے مطابق پی سی بی کو 2015 میں سب سے زیادہ منافع ہوا جو تقریبا 1 ارب 71 کروڑ روپے ہے.

مصنف کے بارے میں