ایف آئی اے کو کسی کیخلاف کارروائی کیلئے پی سی بی کی اجازت کی ضرورت نہیں, چوہدری نثار

ایف آئی اے کو کسی کیخلاف کارروائی کیلئے پی سی بی کی اجازت کی ضرورت نہیں, چوہدری نثار

اسلام آباد: وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثارنے سپاٹ فکسنگ سکینڈل میں پی سی بی کو کرارا جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایف آئی اے کو کسی کیخلاف کارروائی کرنے کیلئے پی سی بی کی ہدایت یا اجازت کی ضرورت نہیں ہے۔ ایف آئی اے ملکی بدنامی کا باعث بننے والے معاملے کی تحقیقات کرسکتا ہے۔الزامات کے بجائے ایک دوسرے کیساتھ تعاون کرنا چاہیے۔


میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ ایف آئی اے ملکی بدنامی کا باعث بننے والے معاملے کی تحقیقات کرسکتا ہے .الزامات کے بجائے ایک دوسرے کیساتھ تعاون کرنا چاہیے,انتہائی سنجیدہ معاملہ ہے اس کو تماشہ نہ بنائیں۔وزیرداخلہ نے مزید کہا کہ نجم سیٹھی کا گزشتہ روز فون آیاتھا انہوں نے بات کی تھی اور میں نے کہا کہ ملکر کام کریں اور آج دوبارہ نجم سیٹھی سے رابطہ ہوگا۔ چوہدری نثار نے کہا کہ تحقیقات میں ابھی کچھ وقت لگے اور ایف آئی اے کو ہدایت جاری کی کہ یقینی بنایا جائے کہ کوئی بے گناہ نہ پھنسے اور گنہگار بچ نہ پائے۔ایف آئی اے کو پی سی بی کے ساتھ ملکر کام کرنے کی بھی ہدایت کی گئی۔یاد رہے کہ سپاٹ فکسنگ میں مبینہ طور پر ملوث کھلاڑیوں سے تحقیقات کے معاملے پر نجم سیٹھی نے کہا تھا کہ ایف آئی اے کارروائی نہیں کرسکتی یہ پی سی بی کا دائرہ اختیار  میں ہیں ۔ جبکہ شرجیل خان ،شاہ زیب حسن،محمد عرفان اور خالد لطیف نے اپنے بیانات ایف آئی اے کو ریکارڈ کرادیئے ہیں جبکہ ناصر جمشید ملک سے باہر ہونے کی وجہ سے بیان ریکارڈ نہ کراسکے۔