نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے آٹومیٹک اورسیمی آٹو میٹک اسلحے پرپابندی کا اعلان کردیا

نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے آٹومیٹک اورسیمی آٹو میٹک اسلحے پرپابندی کا اعلان کردیا
تصویر بشکریہ ٹوئٹر

کرائسٹ چرچ:نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈن نے فوجی طرز کے ہتھیار رکھنے پر پابندی کا اعلان کردیا۔


تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن نے اسلحے سے متعلق پالیسی بیان دیتے ہوئے کہا کہ مساجد میں خود کار ہتھیار استعمال کیا گیا ،اسلحے سے متعلق قانون سازی جلد کی جائے گی۔فوجی نوعیت کے ہتھیاروں پرپابندی کااطلاق قانون سازی کے فوری بعدہوگا۔

اسالٹ اورنیم خودکارہتھیاروں کی فروخت پربھی پابندی ہوگی۔عالمی خبررساں ایجنسی کے مطابق وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشت گردی میں استعمال ہونے والے ہرقسم کے اسلحے پرپابندی ہوگی۔

اس ضمن میں انہوں نے پریس کانفرنس میں حوالہ دیا کہ مساجد پرحملے میں آٹومیٹک اور سیمی آٹومیٹک اسلحہ استعمال کیا گیا تھا۔وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن نے کہا کہ اسلحے پر پابندی سے متعلق بہت جلد قانون سازی کی جائے گی۔

فوجی نوعیت کے ہتھیاروں پر پابندی کا اطلاق قانون سازی کے فوری بعد ہوگا۔یاد رہے کہ نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں گزشتہ جمعہ کو ہونے والی دہشت گردی کی کارروائیوں میں 50 افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے تھے۔

سفید فام نسل پرست دہشت گرد نے مساجد میں اس وقت فائرنگ کی تھی جب لوگ نماز جمعہ کی ادائیگی کے لیے مساجد میں موجود تھے۔