اسلام آباد دھرنا 16 ویں روز میں داخل ، شہریوں کی مشکلات کم نہ ہو سکیں

اسلام آباد دھرنا 16 ویں روز میں داخل ، شہریوں کی مشکلات کم نہ ہو سکیں

اسلام آباد: فیض آباد انٹرچینج پر مذہبی جماعت کے دھرنے کو آج 16واں روز ہے جس کے باعث جڑواں شہروں کے مکینوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ حکومت اور مذہبی جماعت کے درمیان دھرنا ختم کرنے کے حوالے سے ہونے والے تمام اجلاس بے سود رہے اور کوئی فریق اپنے مطالبے سے پیچھے ہٹنے کو تیار نہیں۔ مذہبی جماعت کا دھرنا آج 16ویں روز میں داخل ہوگیا ہے جب کہ امن و امان برقرار رکھنے کے لئے حکومت کی جانب سے کئے گئے اقدامات کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ 


کئی اہم شاہراہوں کو کنٹینر لگا کر بند کیا گیا ہے جس کی وجہ سے اسکول و کالج جانے والے طلبا و طالبات کو طویل سفر طے کر کے اپنی منزل پر پہنچنا پڑتا ہے، اسی طرح دفاتر میں کام کرنے والے ملازمین بھی شدید پریشان ہیں۔دھرنا ختم کرنے کے لئے گزشتہ روز پنجاب ہاؤس میں حکومت اور دھرنا وفد کے درمیان ڈھائی گھنٹے تک جاری رہنے والے مذاکرات کا کوئی مثبت نتیجہ نہ نکلا تاہم ایک کمیٹی تشکیل دے دی گئی۔

دھرنے کی قیادت کرنے والے  علامہ خادم رضوی کا موقف ہے کہ وزیر قانون زاہد حامد کااستعفیٰ پہلے ہوگا اور مطالبات پورے ہونے تک دھرنا ختم نہیں کیا جائے گا۔