اسرائیل کی جیلوں میں 100 فلسطینی بچے قید

اسرائیل کی جیلوں میں 100 فلسطینی بچے قید

تل ابیب: اسرائیل کی جیلوں میں 18 سال سے کم عمر 100 فلسطینی بچے قید ہیں جن میں 10 لڑکیاں بھی شامل ہیں۔


عالمی یوم حقوق اطفال کی مناسبت سے جاری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج رواں سال کے آغاز سے لے کر اب تک ایک ہزار 150 بچوں کو حراست میں لے چکی ہے۔ بچوں کو حراست میں لئے جانے کا عمل شروع ہونے سے اسرائیل متعدد خلاف ورزیوں کا مرتکب ہوا ہے۔ بچوں کو رات گئے ان کے گھروں سے نہایت بے رحمی کے ساتھ حراست میں لیا گیا ہے۔ بچوں کو براہ راست گولیوں کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

حراست کے بعد بچوں کو تفتیشی اور حراست میں رکھنے کے مراکز بھیجا جاتا ہے، انہیں بھوکا پیاسا رکھا جاتا ہے اور اسی حالت میں زدوکوب اور تحقیر کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ 100 بچوں کو ان کے گھروں میں قید کیا گیا ہے۔