بھارت افغانستان میں ماضی کی غلطیاں نہ دہرائے، گلبدین حکمت یار

بھارت افغانستان میں ماضی کی غلطیاں نہ دہرائے، گلبدین حکمت یار
افغانستان میں جنگ بھارت سمیت کسی کے مفاد میں نہیں، گلبدین حکمت یار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: سابق افغان وزیراعظم گلبدین حکمت یار نے کہا ہے کہ بھارت افغانستان میں ماضی کی غلطیاں نہ دہرائے اور افغان جنگ کسی کے مفاد میں نہیں اور ہم امریکا طالبان امن معاہدے کی حمایت کرتے ہیں۔

انسٹی ٹیوٹ آف پالیسی اسٹڈیز اسلام آباد میں خطاب کرتے ہوئے سربراہ حزب اسلامی اور سابق وزیراعظم افغانستان گلبدین حکمت یار نے کہا کہ افغان سرزمین کسی کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے، امریکا کو افغانستان سے جانا ہو گا۔

گلبدین حکمت یار کا اپنے خطاب میں مزید کہنا تھا کہ افغان گرپوں کو ایک نیوٹرل مقام پر مذاکرات کرنا ہوں گے۔ ُپرامن اور خوشحال پاکستان اور افغانستان کا خواہاں ہوں۔

آئی پی ایس مباحثہ کے مہمان خصوصی حزب اسلامی افغانستان کے سربراہ گلبدین حکمت یار نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ دیرینہ قریبی تعلقات ہیں۔ امریکا مشرق وسطیٰ کے وسائل پر قبضہ کرنے آیا تھا اور امریکا کو بھی افغانستان میں شکست ہوئی کیونکہ امریکا کے پاس افغانستان کو چھوڑنے کا کوئی راستہ نہیں رہا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ دوحہ مذاکراتی عمل متاثر نہیں ہو گا اور امن عمل مزید مستحکم کرنا چاہتے ہیں اور افغان سرزمین کسی کیخلاف استعمال کی اجازت نہیں دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ امریکا اور طالبان کے ساتھ امن معاہدے کی حمایت کرتے ہیں اور افغانستان میں تحفظات کے باوجود امن عماہدے کی حمایت کرتے ہیں۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ افغان سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہونی چاہئے۔ نہ روسی امریکیوں، نہ امریکی روسیوں، نہ بھارت پاکستان اور نہ پاکستان بھارت کیخلاف استعمال کرے۔

گلبدین حکمت یار نے کہا کہ افغانوں کو ایک غیرجانبدار جگہ پر غیرجانبدارمذاکرات کرنا ہوں گے اور امید ہے مستقبل میں پرامن اور خوشحال پاکستان اور افغانستان ہوں گے جبکہ افغانستان میں جنگ بھارت سمیت کسی کے مفاد میں نہیں۔