کلبھوشن یادیو کے دو پاسپورٹ کیوں تھے،بھارتی میڈیا کا سوال

نئی دہلی:بھارت کے معروف اخبار نے کلبھوشن یادیوکے متعلق مضمون شائع کیا ہے جس میں کلبھوشن یادیو کے پراسرار سرگرمیوں کے بارے میں سوالات اُٹھائے گئے ہیں جبکہ بھارتی وزارت خارجہ نے سوالات کا جواب دینے سے معذرت کر لی ہے۔ تفصیلات کے مطابق انڈین ایکسپریس نے ایک مضمون شائع کیا ہے جس میں بھارت کے معروف صحافی کرن تھاپر نے کلبھوشن کے متعلق بھارتی حکومت کا پردہ چاک کیا ہے اور بتا یا ہے بھارتی جاسوس کی شخصیت، رابطوں اور بھارتی حکومت کے موقف پر سوال اُٹھائے ہیں۔
جس میں کہا گیا ہے کلبھوشن یادیو کے پاس دو پاسپورٹ کیوں تھے، کلبھوشن کا دوسراہ پاسپورٹ حسین مبارک پٹیل کے نام سے جاری2003میں جاری ہوا،حسین مبارک پٹیل کے نام سے دوسری تحریر 2014میں ہوئی،بھارتی وزرات خارجہ اس حوالے سوال معذرت کر لی،دوسری طرف بھارتی اخبار ٹائمز آف انڈیا نے دعوی کیا تھا کلبھوشن یادیو نے حسین مبارک پٹیل کے نام پر 2007 سے ممبئی میں اپنی والدہ اونتی کا فلیٹ کرائے ہر لیا، مضمون میں سوال کیاگیا کہ کلبھوشن نے اپنی والدہ کا فلیٹ حسین مبارک پٹیل کے نام سے کرائے پر کیوں لیا؟ کلبھوشن نے اسلام قبول کرنے کے بعد اپنا نام تبدیل کر لیا تھا تو کلبھوشن کے نام کارآمد پاسپورٹ اپنے پاس کیوں رکھا،بھارتی حکومت نے دونوں پاسپورٹ کا ریکارڈ کیوں چیک نہیں کیا۔