کراچی: لیموں کے چھلکے ہوں، عرق، جوس یا شربت ہو یہ تمام جہاں گرمی کی کمی کا احساس دلاتے ہیں، وہیں یہ دیگر طبی فوائد بھی پہنچاتے ہیں۔

لیموں کے ویسے تو کئی طبے فوائد ہیں، مگر ہم یہاں چند ایسے فوائد بتا رہے ہیں، جو آج کل کے بڑے طبے مسائل ہیں، اور لیموں کا استعمال ان بیماریوں یا مسائل میں مدد گار ثابت ہوتا ہے۔

دل کی بیماریوں میں مددگار
لیموں وٹامن سی سے بھرپور ہوتے ہیں، ایک لیموں میں وٹامن سی کی مقدار تقریبا 31 ملی گرام ہوتی ہے، جو کسی بھی شخص کے لیے یومیہ بنیادوں پر معالج کی جانب سے تجویز کردہ ہوتی ہے۔

وزن کی کمی میں مددگار

وزن میں کمی کرنے کے کئی طریقے ہیں، مگر اس کا ایک عام طریقہ سلوبل پیکٹن فائبر کا ہے، جو پیٹ کے نظام کو درست کرنے اور کولیسٹرول کی مقدار کو محدود کرنے میں مددگار ہوتا ہے۔

لیموں کا جوس وزن کی کمی میں اتنا مددگار ثابت نہیں ہوتا، جتنا اس کا عرق ہوتا ہے، تاہم یہ بھی کہا جاتا ہے کہ گرم پانی کے ساتھ لیموں کا رس استعمال کیا جائے تو وہ بھی فائدہ مند ہوتا ہے۔

گردوں کی پتھری میں مددگار
لیموں میں موجود سٹرک ایسڈ، پوٹاشیم، کیلشیئم اور دیگر جزیات مل کر گردوں میں پتھری کی پیدائش کو روکتے ہیں۔ لیموں کے جوس،عرق یا چھلکے کا یومیہ استعمال پیشاب کی صلاحیت کو بڑھادیتا ہے، جس سے کڈنی میں خرابی پیدا ہونےکے امکانات کم ہوتے ہیں۔

تو لیموں پانی سے لطف اندوز ہوں مگر کوشش کریں کہ اس میں چینی کا اضافہ نہ کریں کیونکہ اس سے گردوں میں پتھری کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

خون کی کمی میں مددگار
لیموں میں شامل وٹامن سی اینیمیا کے خلاف لڑتا تو نہیں مگر یہ آئرن کی طاقت کو ضرور بڑھاتا ہے جو اس بیماری کی روک تھام میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

کینسر کے خطرات کم کرنے میں مددگار

لیموں میں شامل لیمونین، بیٹا کراپٹوکسینتھن، ہیسپیریڈن اور نیرنگینین نامی جزیات کینسر کے خطرات کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

ہاضمے اور پیٹ کی بیماریوں میں مددگار
لیموں میں ایسے جزیات پائے جاتے ہیں جو اسپغول میں موجود ہوتے ہیں، یہ جزیات جہاں کولیسٹرول اور پیٹ کے اندرونی گوشت کو پھیلنے سے روکنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں، وہیں یہ ہاضمے کا نظام بھی درست کرنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔