عمران خان کی درخواست ضمانت اعتراضات کے ساتھ سماعت کیلئے مقرر

عمران خان کی درخواست ضمانت اعتراضات کے ساتھ سماعت کیلئے مقرر

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کی حفاظتی ضمانت کی درخواست اعتراضات کے ساتھ ہی سماعت کیلئے مقرر کر دی گئی ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق عمران خان نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں قبل از گرفتاری ضمانت کی درخواست دائر کی جس پر رجسٹرار آفس نے 3 اعتراضات عائد کئے ہیں۔ 

ذرائع رجسٹرار آفس کا کہنا ہے کہ عمران خان نے بائیو میٹرک نہیں کرایا، اعتراض کیا گیا ہے کہ انسداد دہشت گردی عدالت میں جانے کی بجائے ہائیکورٹ کیسے آ گئے؟ جبکہ یہ اعتراض بھی عائد کیا گیا ہے کہ دہشت گردی کے مقدمے کی مصدقہ نقل فراہم نہیں کی گئی۔

بعد ازاں عمران خان کی درخواست ضمانت اعتراضات کے ساتھ آج ہی سماعت کیلئے مقرر کر دی گئی ہے اور اسلام آباد ہائیکورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس، جسٹس عامر فاروق کیس کی سماعت کریں گے۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی کے وکیل فیصل چوہدری اور عمران خان کے قانونی مشیر بابر اعوان نے لیگل ٹیم کے ہمراہ اسلام آباد ہائیکورٹ میں عمران خان کی قبل از گرفتاری ضمانت کی درخواست دائر کی۔ 

ذرائع کے مطابق پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی بھی اسلام آباد ہائیکورٹ پہنچے جن کا کہنا تھا کہ عمران خان کی قبل از گرفتاری ضمانت کا معاملہ ہے، اس لئے عدالت آئے ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز عمران خان کے خلاف پولیس افسران اور خاتون جج کو دھمکی دینے پر دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا جس میں ان کی گرفتاری بھی متوقع ہے۔

دوسری جانب ذرائع کا بتانا ہے کہ وزارت داخلہ نے عمران خان کی گرفتاری کیلئے وزیراعظم ہاؤس سے تحریری جواب طلب کر لیا ہے۔

عمران خان کی ممکنہ گرفتاری کے باعث پی ٹی آئی کارکنان کی بڑی تعداد بنی گالہ کے باہر جمع ہے جبکہ پولیس نے بھی ناکہ بندی کر کے بنی گالہ کی جانب جانے والے راستے بند کر دئیے ہیں۔ 

مصنف کے بارے میں