افغانستان نے 85دہشتگردوں کی حوالگی ک مطالبہ کر دیا

افغانستان نے 85دہشتگردوں کی حوالگی ک مطالبہ کر دیا

اسلام آباد: افغان وزراتِ خارجہ نے پاکستان سے طالبان، حقانی نیٹ ورک اور دیگر شدت پسند تنظیموں سے تعلق رکھنے والے 85 رہنماؤں کی گرفتاری کے بعد حوا لگی اور دہشت گردوں کے 32 مبینہ تربیتی مراکز کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کردیا۔


 افغان وزارتِ خارجہ کی جانب سے بھیجے گئے مراسلے میں پاکستان کو مطلع کیا گیا کہ اگر تشدد کا سلسلہ یونہی جاری رہتا ہے، تو کابل دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف بین الاقوامی پابندیاں حاصل کرنے کی کوشش کرسکتا ہے۔

افغان وزارتِ خارجہ کے مطابق وہ اسلام آباد کے ساتھ مل کر 4فریقی رابطہ گروپ کے تحت دہشت گردی کے خلاف کام کریں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس حوالے سے 85 شدت پسند رہنماؤں اور سرحد پار دہشت گردوں کے 32 خفیہ ٹھکانوں کی فہرست پاکستان کو فراہم کی جاچکی ہے جو کہ افغانستان میں تخریب کاری میں ملوث ہیں۔

افغان وزارت خارجہ کے بیان کے مطابق پاکستان نے مثبت انداز میں یہ فہرست وصول کی، امید ہے کہ ان کے خلاف مؤثر کارروائی بھی کی جائے گی۔