زینب قتل کیس، قصور پولیس نے ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کر لیا

زینب قتل کیس، قصور پولیس نے ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کر لیا

قصور: زینب قتل کیس میں قصور پولیس نے ایک اور مشتبہ شخص کو حراست میں لیا ہے۔ اس حوالے سے ذرائع نے تصدیق کی کہ ملزم کو علاقے میں نصب سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیج کی مدد سے حراست میں لیا گیا۔ پولیس نے مشکوک شخص کو گرفتار کر کے ہتھکڑی لگائی اور اپنے ساتھ لے گئی جہاں اس سے زینب قتل کیس کے حوالے سے مختلف پہلوئوں پر تفتیش کی جائے گی۔


خیال رہے وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف نے کہا تھا کہ زینب قتل کیس کی نگرانی خود کر رہا ہوں اور قومی کی بیٹی کے قاتل کو اس کے انجام تک پہنچائیں گے۔ زینب قتل کیس میں سائنٹیفک طور پر کی جانیوالی تحقیقات میں پیش رفت ہوئی ہے اور ملزم پکڑے جائیں گے تاہم کوئی ٹائم فریم نہیں دے سکتا اگر اہل محلہ میں سے کسی کو کوئی معلومات ہیں تو شیئر کریں جبکہ ملزم کے بارے میں معلومات فراہم کرنیوالے کا نام راز میں رکھا جائے گا۔

یاد رہے پنجاب کے ضلع قصور سے اغوا کی جانے والی 7 سالہ بچی زینب کو زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا جس کی لاش 9 جنوری کو کچرا کنڈی سے ملی۔ زینب کے قتل سے ملک بھر میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی اور قصور میں پرتشدد مظاہرے پھوٹ پڑے جس سے 2 افراد پولیس فائرنگ سے جاں بحق ہو گئے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں