اسٹیٹ بینک نے آئندہ 2 ماہ کیلئے مانیٹری پالیسی کا اعلان کر دیا

اسٹیٹ بینک نے آئندہ 2 ماہ کیلئے مانیٹری پالیسی کا اعلان کر دیا

کراچی: آئندہ دو ماہ کے لیے مانیٹری پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے نئے گورنر اسٹیٹ بینک طارق باجوہ کا کہنا تھا اس وقت ملکی معیشت میں برآمدات اور ترسیلات زر میں کمی اور درآمدات میں اضافے کا رجحان ہے۔ اس لیے برآمدات بڑھانے کے لیے اہم اقدامات کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ مالی سال کی نسبت رواں سال مرکزی بینک کے پاس موجود غیرملکی زرمبادلہ کے ذخائر تقریباً 2 ارب ڈالر کی کمی کے ساتھ 16 ارب ڈالر تک پہنچ گئے ہیں۔ طارق باجوہ نے کہا کہ رواں مالی سال مہنگائی کی شرح 4 اعشاریہ 5 سے 5 اعشاریہ 5 فیصد تک رہنے کا امکان ہے۔

انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تحت توانائی، بنیادی ڈھانچے کے منصوبوں پرکام جاری ہے اور ان منصوبوں کی وجہ سے معیشت میں بہتری کے امکانات روشن ہیں۔

گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ قومی معیشت وسعت کے مرحلے سے گزر رہی ہےاور سروسز اور تعمیرات کے شعبے میں ترقی دیکھی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ خدمات کے شعبے میں 6 فیصد ترقی ہوئی جب کہ ملک کا کرنٹ اکاونٹ خسارہ 12 اعشاریہ 1 ارب ڈالر رہا۔

یاد رہے طارق باجوہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے سابق ڈائریکٹر ہیں اور انہیں رواں ماہ 7 جولائی کو 3 برس کے لیے مرکزی بینک کا گورنر تعینات کیا گیا۔ بطور گورنر اسٹیٹ بینک تعیناتی کے بعد یہ طارق باجوہ کی پہلی مانیٹری پالیسی ہے۔

 

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں