افغانستان اور آئر لینڈ کو ٹیسٹ ٹیم کا درجہ مل گیا

افغانستان اور آئر لینڈ کو ٹیسٹ ٹیم کا درجہ مل گیا

دبئی :  آئی سی سی نے افغانستان اور آئر لینڈ کو ٹیسٹ سٹیسٹس کا درجہ دیدیا ۔آئی سی سی کانفرنس میں افغانستان اور آئر لینڈ کو مکمل اراکین کی حیثیت کو بڑھا دیا دیا ہے جن میں دو نئی ٹیمیں افغانستان اور آئر لینڈ کو شامل کیا گیا ہے ۔ 


انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے جمعرات کو اعلان کیا کہ آئرلینڈ اور افغانستان دونوں ٹیسٹ میچ کی حیثیت سے نوازا ہیں. جس کا مطلب یہ ہے کہ دونوں ملک آئی سی سی کے  مکمل ممبر بن گئے ہیں ۔ آئی سی سی کے مکمل ممبر کی تعداد پہلے 10 تھی جو اب بڑھ کر 12 ہو گئی ہے . دونوں ملکوں کو  آئی سی سی کونسل کے اجلاس میں ایک متفقہ ووٹ کے بعد مکمل ممبران کو مکمل طور پر منظور کیا.مکمل ممبر بننے کے بعد افغانستان  اور  آئر لینڈ  پانچ روزہ ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے کے اہل ہوں گے. جس سے بڑے پیمانے پر اس کھیل کی پنکھ شکل کی حیثیت سے سمجھا جاتا ہے.

افغانستان کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو شفیق ستانکزی نے کہا، "افغانستان جیسے ملک کے لئے یہ ایک بہت بڑا اور قابل ذکر کامیابی ہے، پورے ملک میں پانچ علاقوں اور مختلف صوبوں میں جشن منایا جائے گا، یہ افغانستان کیلئے عید کا تحفہ ہے.ہر ایک نے اس خبر کا  انتظار کیا ہے اور اس خبر کو سننے کے بعد ہر ایک نے ہماری حوصلہ افزائی کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان کرکٹ ٹیم ایک مضبوط ٹیم کی حیثیت نے ابھری ہے اور ہم نے اس ٹیم کو ٹیسٹ اسٹیس کا درجہ دلوانے کیلئے سخت محنت کی ایک خواب دیکھا تھا جو آج پورا ہو رہا ہے ۔

 یہ تقریبا دو دہائیوں بعد ایسا ہوا ہے کہ کسی ٹیم کو ٹیسٹ ٹیم کا درجہ دیا جائے ۔   بنگلہ دیش کو آخری بار ٹیسٹ ٹیم کا درجہ دیا گیا تھا اس کے بعد ایسا ممکن نہیں ہوا ۔  لیکن افغانستان اور آئرلینڈ نے اب بھی ایک خصوصی کلب میں شامل کیا ہے جس میں بانی اراکین آسٹریلیا اور انگلینڈ شامل ہیں، جو 1877 میں میلبورن میں پہلا ٹیسٹ میچ کھیلے ۔ آئی سی سی کے فل ممبران یہ ہیں ۔

آسٹریلیا ، انگلینڈ ، جنوبی افریقہ، نیوزی لینڈ، ویسٹ انڈیز، بھارت، پاکستان، سری لنکا ، زمبابوے ، بنگلہ دیش ، افغانستان اور آئرلینڈ  شامل ہیں ۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں  

ندیم حسن کلیر< Editor