اسحاق ڈار کی رہائش گاہ کیلئے پارک اکھاڑ کر سڑک بنانے کا معاملہ، چیف جسٹس برہم

اسحاق ڈار کی رہائش گاہ کیلئے پارک اکھاڑ کر سڑک بنانے کا معاملہ، چیف جسٹس برہم

لاہور: سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے اسحاق ڈارکی رہائش گاہ کے لیے پارک ختم کر کے سڑک بنانے پراز خود نوٹس کی سماعت کی۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس نے ڈی جی لاہور ڈیولپمنٹ اتھارٹی سے استفسار کیا کہ کس کے کہنے پر آپ نے پارک کو اکھاڑ کر سڑک بنائی ۔


یہ خبر بھی پڑھیں: ملکی مفاد کیلئے ہر ادارے کے ساتھ مذاکرات کے لئے تیار ہوں، نواز شریف

ڈی جی ایل ڈی اے نے بتایا کہ اسحاق ڈار نے پارکنگ کے لیے سڑک کھلی کرنے کی درخواست کی تھی۔ چیف جسٹس پاکستان نے استفسار کیا کہ کیا آپ کو اسحاق ڈار نے تحریری طور پر درخواست دی تھی تو ڈی جی ایل ڈی اے نے بتایا کہ اسحاق ڈار نے فون کر کے سڑک بنانے کا کہا تھا۔

چیف جسٹس پاکستان نے ڈی جی ایل ڈی اے پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ آپ کس طرح کے آفیسر ہیں ایک وزیر کے زبان ہلانے پر پارک ہی اکھاڑ دیا آپ کو اس کی سزا بھگتنی ہو گی کیونکہ یہاں پسند نا پسند نہیں چلنے دوں گا۔ آپ کے خلاف نیب کے قوانین کے تحت کارروائی بنتی ہے جس پر ڈی جی ایل ڈی اے نے کہا کہ میں عدالت سے غیرمشروط طور معافی مانگتا ہوں۔

چیف جسٹس نے جواب میں ریمارکس دیئے کہ اس عدالت سے معافی کا وقت گزر گیا آپ تحریری طور پر یہ بتائیں کہ پارک کتنی اراضی پر بنا ہوا ہے اور حلف نامے کے ساتھ تمام ریکارڈ لے کر آئیں۔

مزید پڑھیں: سفارت کاروں کی ہراسگی کا معاملہ، پاکستان نے شواہد بھارت کو فراہم کر دیئے

چیف جسٹس پاکستان نے ڈی جی ایل ڈی اے سے استفسار کیا کہ آپ کے ساتھ کیا سلوک کیا جائے جس پر ڈی جی ایل ڈی اے نے کہا کہ مجھے معاف کر دیا جائے کیونکہ اس میں میرا قصور نہیں ہے۔ ڈی جی ایل ڈی اے کے جواب پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ جھوٹ بول رہے ہیں آپ کے اعتراف کی ریکارڈنگ موجود ہے اور آپ کے خلاف نیب کے سیکشن 9 کے تحت کاروائی بنتی ہے۔ جس پر ڈی جی ایل ڈی اے نے استدعا کی کہ مقدمہ نیب کو نہ بھیجیں اور مجھے معاف کر دیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ جب مقدمہ نیب کو جاتا ہے تو سب ہڑتال کرنا شروع کر دیتے ہیں اور اب آپ ہڑتال کریں۔

چیف جسٹس نے 10 روز میں پارک کو اصلی حالت میں بحال کرنے کا حکم دے دیتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ پارک کی جگہ سڑک بنانے اور سڑک کو دوبارہ پارک بنانے کا مکمل خرچہ اسحاق ڈار سے وصول کیا جائے۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں