وزیر خزانہ کو مفرور قرار دئیے جانے سے پہلے استعفیٰ دے دینا چاہیے تھا : ریاض پیرزادہ

وزیر خزانہ کو مفرور قرار دئیے جانے سے پہلے استعفیٰ دے دینا چاہیے تھا : ریاض پیرزادہ

اسلام آباد:وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما ریاض پیرزادہ نے کہا ہے کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو مفرور قرار دئیے یجانے سے پہلے خود استعفیٰ دے دینا چاہیے تھا ‘ وفاقی وزیر کو مفرور قرار دینا جانا حکومت کیلئے اچھا نہیں ہے ‘ چوہدری نثار ہوتے تو فیض آباد دھرنے کو کنٹرول کر لیتے ‘ وزارت داخلہ چلانے کیلئے مہارت کی ضرورت ہے ‘ دھرنے کا مسئلہ گفتگو اور مذاکرات سے حل کیاجائے تو بہتر ہو گا۔


ایک بیان میں ریاض پیرزادہ نے کہا کہ بہتر ہوتا مقدمے کے بعد اسحاق ڈار خود مستعفی ہو جاتے۔ ایسے حالات میں استعفیٰ جمہوریت کی خوبصورتی سمجھا جاتا ہے۔ استعفیٰ نہ دینے سے پیغام جاتا ہے کہ حکومت اپنا نظام چاہتی ہے ۔ وفاقی وزیر کو مفرور قرار دیاجانا حکومت کیلئے اچھا نہیں ہے۔ بہتر ہوتا مفرور قرار دینے سے پہلے اسحاق ڈار خود مستعفی ہو جاتے۔

انہوں نے کہا کہ زاہد حامد کا قصور نہیں انہیں ہدف بنایا گیا ہے۔ احسن اقبال نئے وزیر داخلہ بنے ہیں انہیں دھرنے جیسی چیزوں کا ادراک نہیں ہے۔ وزارت داخلہ چلانے کیلئے مہارت چاہیے۔ چوہدری نثار ہوتے تو دھرنے کی صورتحال کنٹرول کر لیتے۔ مسئلہ گفتگو اور مذاکرات سے حل کیا جائے تو بہتر ی نکلے گی۔ مسئلہ حل نہ ہو تو حکومت کے پاس طاقت استعمال کرنے کا آپشن موجود ہوتا ہے۔