وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے وزیراعظم سے چھٹی کی درخواست کردی

وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے وزیراعظم سے چھٹی کی درخواست کردی

اسلام آباد: وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے بیماری کے باعث وزیراعظم سے چھٹی کی درخواست کر  دی۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار گزشتہ کئی دنوں سے لندن میں موجود ہیں، گزشتہ دنوں ان کے مستعفی ہونے کی خبریں سامنے آئی تھیں لیکن وزیراعظم کے ترجمان مصدق ملک نے اس کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ اسحاق ڈار بدستور وزیر خزانہ ہیں۔


میڈیا رپورٹ کے مطابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو خط لکھا ہے جس میں بیماری کے باعث چھٹی کی درخواست کی گئی ہے۔اسحاق ڈار کی جانب سے وزیراعظم کو لکھے گئے خط میں وزیر خزانہ کی ذمہ داریوں سے سبکدوش کرنے کی بھی درخواست کی گئی ہے۔وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے وزیراعظم کو خط لکھنے سے پہلے پارٹی صدر نوازشریف کو اعتماد میں لیا۔

ذرائع نے بتایا کہ ڈاکٹروں نے اسحاق ڈار کو مشورہ دیا ہے کہ وہ طبیعت کی بہتری تک سفر نہیں کرسکتے۔ذرائع کا کہنا تھا کہ اسحاق ڈار نے ہمیشہ عدالتوں کا احترام کیا ہے اور جب ان کی صحت اجازت دے گی وہ عدالتوں کے سامنے پیش ہوں گے۔ذرائع کے مطابق اسحاق ڈار کی غیر موجودگی میں وزیراعظم کی زیر صدارت اقتصادی مشاورتی کونسل ذمہ داریاں سنبھالے گی۔وفاقی وزیر خزانہ تقریبا ایک ماہ قبل لندن پہنچے تھے جہاں ہارلے اسٹریٹ ہسپتال میں ان کا علاج جاری ہے۔اپنے دل کے علاج کے سلسلے میں وہ ہفتے میں تین مرتبہ ہسپتال جارہے ہیں جبکہ وہ ایک ہفتہ ہسپتال میں داخل بھی رہے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم ان کی درخواست قبول کرتے ہوئے جلد اس حوالے سے باضابطہ اعلان کریں گے۔واضح رہے کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے خلاف احتساب عدالت میں آمدن سے زائد اثاثوں کا ریفرنس زیر سماعت ہے جس میں ان پر فرد جرم عائد ہوچکی ہے جبکہ مسلسل غیر حاضری پر عدالت نے وزیر خزانہ کو مفرور قرار دیتے ہوئے انہیں اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرنے کا حکم دیا ہے۔نیب نے اسحاق ڈار کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کے لیے وزارت داخلہ کو خط لکھ دیا ہے۔

اسحاق ڈار کے وکیل نے عدالت کو بتایا ہے کہ ان کے مکل دل کے عارضے میں مبتلا ہیں جس کے علاج کے سلسلے میں ہی وہ لندن میں موجود ہیں

نیوویب ڈیسک< News Source