امریکاکا فوجی طیارہ سمندر میں گر کر تباہ

امریکاکا فوجی طیارہ سمندر میں گر کر تباہ

واشنگٹن: امریکا کا ایک فوجی طیارہ فلپائن کے سمندر میں گر کر تباہ ہوگیا ہے ۔طیارے میں گیارہ افراد سوار تھے ۔ان میں سے آٹھ کو بچا لیا گیا ہے۔


تفصیلات کے مطابق یہ فوجی طیارہ سمندر میں موجود امریکی طیارہ بردار جہاز یو ایس ایس رونالڈ ریگن کی جانب جارہا تھا لیکن اس پر اترنے سے پہلے سمندر میں گر کر تباہ ہوگیا۔ رونالڈ ریگن فلپائنی سمندر میں گشت پر مامورہے۔

امریکی حکام نے بتایا ہے کہ طیارے کو حادثہ انجن کی خرابی کی وجہ سے پیش آیا ہے۔امریکی بحریہ کے ایک بیان کے مطابق حادثے میں زندہ بچ جانے والے افراد کا طبی معائنہ کیا جائے گا اور اس سے ان کی صحت کا پتا چل سکے گا۔البتہ انھوں نے طیارے میں سوار تین افراد کے بارے میں کچھ نہیں بتایا ہے۔

ٹوکیو میں جاپان کے وزیر دفاع ایتسنوری اونوڈیرا نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ طیارے میں سوار افراد کو نکالنے کے لیے سمندر میں امریکی علاقے میں تلاشی اور ریسکیو کی کارروائی جاری ہے۔تاہم فوری طور پر یہ اطلاع نہیں ملی ہے کہ کس قسم کے طیارے کو یہ حادثہ پیش آیا ہے۔اس وقت یو ایس ایس رونالڈ ریگن پر 60 سے زیادہ طیارے اور ہیلی کاپٹرز موجود ہیں۔ان میں ٹرانسپورٹ اور لڑاکا طیارے دونوں شامل ہیں۔

واضح رہے کہ بحر الکاہل کے مغربی حصے میں جاپان اور جنوبی کوریا کی ساحلی حدود میں امریکی فوجیوں کی بڑی تعداد بھاری فوجی مشینری سمیت موجود ہے۔حالیہ مہینوں کے دوران میں مشرقی ایشیا میں امریکا کے بحری جہازوں کو متعدد حادثات پیش آچکے ہیں۔

۔