امریکی ایوان نما ئندگان میں مسئلہ کشمیر کی گونج، بھارتی مظالم کیخلاف بل پیش

امریکی ایوان نما ئندگان میں مسئلہ کشمیر کی گونج، بھارتی مظالم کیخلاف بل پیش
محکمہ خارجہ امریکی کشمیریوں کی خاندانوں تک رابطے کو ممکن بنائے، بل کا متن۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

واشنگٹن: امریکی ایوان نما ئندگان میں مسئلہ کشمیر کی گونج، رکن کانگریس راشدہ طلیب کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں مظالم کے خلاف بل پیش کر دیا۔ وادی میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی مذمت کرتے ہوئے بھارت سے ایک سو دس روز سے جاری کرفیو ختم کرنے کا مطالبہ کر دیا۔


امریکی ایوان نمائندگان میں مسلم کانگریس وومن نے کشمیر سے متعلق قرارداد پیش کر دی۔ مسلم کانگریس وومن کی رکن رشیدہ طلیب نے مقبوضہ کشمیر سے متعلق بل کا مسودہ پیش کیا جس میں کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی مذمت کی گئی ہے۔

بل کے مسودے میں کہا گیا ہے کہ بھارت نے کشمیر میں سخت کرفیو کا نفاذ کیا ہوا ہے۔ کشمیریوں کے خلاف طاقت کا استعمال کیا جا رہا ہے اور اقوام متحدہ کو کشمیر تک رسائی فراہم کی جائے۔

بل کے مطابق محکمہ خارجہ امریکی کشمیریوں کی خاندانوں تک رابطے کو ممکن بنائے۔ بھارت گرفتار کشمیری رہنماؤں اور شہریوں کو رہا کرے، کشمیر میں پیلٹ گن کا استعمال بند کیا جائے۔

مقبوضہ وادی میں ایک سو دس روز سے صورتحال کشیدہ ہے اور کشمیری گھروں میں قید ہیں، انٹرنیٹ، موبائل سروس، ٹرانسپورٹ بدستور بند ہیں۔