چقندرکا جوس دماغ کو توانا اور جوان رکھنے میں انتہائی معاون ہے ، امریکی ماہرین

اسلام آباد : امریکی ماہرین نے چقندرکے جوس کو دماغ کو توانا اور جوان رکھنے میں معاون قرار دے دیا۔ نارتھ کیرولینا میں واقع ویک فاریسٹ یونیورسٹی کے ماہرین کے مطابق اگر ورزش اور جاگنگ سے قبل چقندر کا جوس پیا جائے تو اس سے دماغ کے بعض حصے بہت مضبوط اور سرگرم ہوجاتے ہیں جبکہ چقندر کا مستقل استعمال آپ کے دماغ کو جوان اور توانا رکھتا ہے۔ یہاں تک کہ اپنے خاندان میں ڈیمنشیا اور دماغی امراض کی تاریخ رکھنے والے افراد بھی اس سے اپنے دماغ کو بچاسکتے ہیں ، اس کی وجہ چقندر میں موجود نائٹرک آکسائیڈ ہے جو فوری طور پر دماغ میں خون کے بہاو¿ کو بڑھاتا ہے اور ورزش کے عمل کو بہتر بناتا ہے۔
ماہرین کے مطابق نائٹرک آکسائیڈ ایک بہت طاقتور عنصر ہے اور یہ جسم کے ان حصوں تک جاتا ہے جہاں آکسیجن کی ضرورت ہوتی ہے اور ہم جانتے ہیں کہ ہمارا دماغ غیرمعمولی طور پر زائد آکسیجن استعمال کرتا ہے۔ چقندر کا جوس ورزش کے ساتھ مل کر دماغ پر کچھ ایسا ہی مثبت اثر ڈالتا ہے کہ وہ بہت حد تک نوجوانوں کے دماغ سے مشابہ ہوجاتا ہے۔ماہرین نے اس تحقیق کے لیے 55 سال یا اس سے زائد عمر کے افراد کا سروے کیا۔
انہیں دو گروہوں میں تقیسم کرکے انہیں 50 منٹ تک چہل قدمی کرائی گئی۔ ایک گروپ کو چقندر کا جوس دیا گیا اور دوسرے گروہ کو جوس نہیں پلایا گیا۔ ہر ہفتے 3 مرتبہ لوگوں پر یہ تجربات کیے گئے اور اس تجربے کو 6 ہفتے تک جاری رکھا گیا۔جنہوں نے چہل قدمی سے قبل چقندر کا جوس پیا تھا ان کے دماغ کے وہ مقامات قدرے سرگرم دیکھے گئے جو حرکت، جذبات اور سمجھ بوجھ سے تعلق رکھتے ہیں علاوہ ازیں ان کے جسم میں نائٹریٹ اور نائٹرائٹ کی بلند شرح بھی دیکھی گئی۔
ماہرین نے مشورہ دیا کہ اگر صبح یا شام کی ورزش سے قبل ایک کپ چقندر کا جوس پی لیں تو اس سے دماغ تروتازہ اور جوان رہتا ہے۔اس سے قبل کوئن میری یونیورسٹی لندن کے ماہرین کا بھی اپنی تحقیق میں کہا تھا کہ اگر آپ روزانہ 250 ملی لیٹر چقندر کا رس استعمال کریں تو اس سے بلڈ پریشر کا خطرہ کافی حد تک کم ہوجاتا ہے۔