پاکستان کی سر زمین کسی بھی دہشت گرد کیلئے محفوظ پناہ گاہ نہیں، اعزاز

پاکستان کی سر زمین کسی بھی دہشت گرد کیلئے محفوظ پناہ گاہ نہیں، اعزاز

واشنگٹن: امریکا میں پاکستان کے سفیر اعزاز چوہدری نے کہا ہے کہ افغانستان میں امن پاکستان کے مفاد میں ہے۔ پاکستان غیر مستحکم افغانستان کے منفی اثرات 38 برس سے بھگت رہا ہے۔


اعزاز چوہدری نے یہ بات ڈونلڈ ٹرمپ کی نئی افغان پالیسی کے اعلان بعد کہی اور ساتھ یہ بھی کہا کہ امریکی انتطامیہ سے ملاقات کر کے نئی پالیسی کی تفصیل جاننے کی کوشش کریں گے۔

اعزاز چوہدری نے بتایا کہ قیام پاکستان سے آج تک کا نصف سے زائد عرصہ انہی منفی اثرات کا سامنا کرتے گزرا جبکہ پاکستان نے مستحکم اور پرامن افغانستان کے لیے عالمی کوششوں کا مستقل ساتھ دیا ہے۔

پاکستانی سفیر کا کہنا تھا کہ صرف افغانیوں کی قیادت میں مذاکرات ہی افغانستان میں دیرپا امن لا سکتے ہیں تاہم انسداد دہشت گردی کی کوششوں میں پاکستان کا کسی سے موازنہ نہیں کیا جا سکتا۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستانی قیادت واضح کرتی رہی ہے کہ اس کی سر زمین کسی بھی دہشت گرد کے لیے محفوظ پناہ گاہ نہیں ہے۔ پاکستان امریکا کے ساتھ تعمیری انداز میں بات چیت کا سلسلہ جاری رکھنا چاہتا ہے تاکہ خطے میں دیرپا امن اور استحکام آ سکے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں