'دہشت گردی کیخلاف جنگ ہماری نہیں تھی بلکہ ہم پر مسلط کی گئی'

'دہشت گردی کیخلاف جنگ ہماری نہیں تھی بلکہ ہم پر مسلط کی گئی'

واشنگٹن: پاکستانی سفارتخانے کی جانب سے دہشت گردی کےخلاف کوششوں کا حقائق نامہ جاری کر دیا گیا ہے جس کے مطابق پاکستان میں دہشت گروں کے خلاف 13 فوجی آپریشن کیے گئے جبکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں 6 ہزار 8 سو اہلکاروں سمیت 21 ہزار پاکستانی جاں بحق ہوئے۔


پاکستانی سفارتخانے میں آرمی پبلک اسکول کے شہدا کی یاد میں تقریب سے خطاب میں پاکستانی سفیر اعزاز چوہدری نے کہا ہے کہ پاکستان کی قربانیوں کو تسلیم نہ کرنا باعث افسوس ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ افغانستان میں استحکام کا قیام پاکستان کی ذمے داری نہیں ہے اور دہشت گردی کے خلاف جنگ ہماری نہیں تھی بلکہ ہم پر مسلط کی گئی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ پاکستان کی جنگ بن گئی جبکہ یہ جنگ ابھی ختم نہیں ہوئی تاہم دہشت گردی کا مائنڈ سیٹ ختم کرنےکی ضرورت ہے۔

پاکستانی سفیر نے بتایا کہ دنیا کے ہر ملک اور معاشرے میں کچھ انتہا پسند ہوتے ہیں جبکہ دہشت گردی پاکستان اور امریکا کی دشمن ہے۔ ہمیں اس کے خلاف مل کر لڑنا ہو گا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں