کرپٹ ممالک میں پاکستان 117 ویں نمبر پر

 کرپٹ ممالک میں پاکستان 117 ویں نمبر پر

لاہور: دنیا میں کرپشن پر نظر رکھنے والے ادارے ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل (ٹی آئی) نے اپنی تازہ سالانہ رپورٹ ‘کرپشن پرسیپشن انڈیکس 2017’ میں پاکستان کو درجہ بندی کے اعتبار سے 180 کی فہرست میں سے 117 ویں نمبر پر رکھا ہے جبکہ سال 2016 میں 176 ممالک میں سے پاکستان کا نمبر 116 واں تھا۔


کرپشن کی پیمائش کے لیے ایک سے 100 تک اسکورز متعین کیے ہیں جتنے زیادہ اسکورز ہوں گے کرپشن کے خلاف اس ملک کی کارکردگی اتنی بہتر تصور کی جائے گی۔ ٹی آئی کی جانب سے جاری انڈیکس رپورٹ میں کہا گیا کہ انسدادِ کرپشن سے متعلق متعدد اقدامات کے باوجود بعض ممالک کریشن کی روک تھام میں انتہائی سست روی کا شکار ہیں۔

ٹی آئی کے مطابق کرپشن کی طاقت ور لہروں کو قابو کرنے میں وقت درکار ہے جبکہ گزشتہ چھ برسوں میں انسدادِ کرپشن کے حوالے سے معمولی اقدامات اٹھائے لیکن ان ممالک میں صورتحال مزید خراب رہی جہاں میڈیا (اخبارات) اور غیر سرکاری تنظیم (این جی اوز) کو تحفظ فراہم نہیں کیا گیا۔

ٹی آئی نے بتایا کہ دو تھائی ممالک 50 اسکور کر سکے جبکہ مجموعی طور پر اسکور 43 رہا جو کہ اچھی کارکردگی کی نشانی نہیں ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ شام، جنوبی سوڈان اور سومالیا میں کرپشن کا جن بے قابو ہے۔ مذکورہ ممالک بلترتیب 9، 12، 14 ویں نمبر آئے جبکہ نیوزی لینڈ اور ڈینمارک نے اپنے ملکوں میں کرپشن کو کنٹرول کر کے صف اول پر رہے اور بلترتیب 89 اور 88 نمبر پر آئے۔

جنوبی یورپ میں بھی انسدادِ کرپشن کی کارکردگی بہت اچھی ریکارڈ کی گئی اور مجموعی طور پر 66 ویں نمبر آیا۔ خراب کارکردگی کے حوالے سے سب سہارن افریقی ممالک (32واں)، جنوبی یورپ اور وسطیٰ ایشیا (34ویں) نمبر آئے۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ کرپشن زدہ ممالک کے صحافیوں اور سماجی کارکنوں کو کرپشن کے خلاف لکھنے اور بولنے پر زندگی کا خطرہ لاحق رہتا ہے۔ ٹی آئی کے انڈیکس میں کرپشن ، صحافیوں کے تحفظ اور سول سوسائٹی کے کردار کے مابین تعلقات کا جائزہ لیا تو انکشاف ہوا کہ 2012 سے ابتک ہلاک ہونے والے تمام صحافیوں کا تعلق کرپشن زدہ ممالک سے ہے۔

ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کی مینجنگ ڈائریکٹر پیٹریکا موریرا نے کہا کہ انسدادِ کرپشن کے لیے عالمی اتحاد میں ضروری ہے کہ سول سوسائٹی اور میڈیا کے ان کارکنوں کو تحفظ فراہم کیا جائے جو کرپشن کےخلاف آواز اٹھاتے ہیں۔

رپورٹ میں شامل کمیٹی ٹو پروٹیکٹ جرنلسٹس کے فراہم کردہ اعداد و شمار کا تجزیہ بھی کیا گیا جس سے اندازہ ہوا کہ ‘کرپشن پرسیپشن انڈیکس 2017’ میں جن ممالک کا نمبر 45 سے کم آیا ادھر 10 سے میں 9 صحافی قتل کیے گئے جس کی رو سے انتہائی کرپشن زدہ ممالک میں ہر ہفتے ایک صحافی کو قتل کیا گیا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں