امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا حکومت کیخلاف تحریک شروع کرنیکا اعلان

امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا حکومت کیخلاف تحریک شروع کرنیکا اعلان

چارسدہ: امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ان کی جماعت جلد پاکستان تحریک انصاف کی پالیسیوں کے خلاف تحریک شروع کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق چارسدہ میں دستاربندی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پچھلے 18 ماہ میں حکومت نے کوئی وعدہ پورا نہیں کیا۔عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کی ایماء پر قیمتوں کا تعین قوم سے زیادتی ہے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ریاست مدینہ کے دعویداروں کے دور میں سودی نظام مزید پروان چڑھا۔ روزگار دینے کے بجائے 22 لاکھ شہری بے روزگار کیے گئے۔ ہماری جی ڈی پی افغانستان سے بھی کم ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت ہر محاذ پر ناکام ہوچکی ہے۔ موجودہ حکمرانوں کی منزل اور مقصد کا کسی کو علم نہیں ہے۔ مہنگائی نے غریب آدمی کی کمر توڑ دی ہے۔

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ ملک بھر میں 32 لاکھ طلباء مدارس میں زیرتعلیم ہیں۔ اسلام کے نام پر بننے والے ملک میں مدرسہ کی اخراجات حکومت کو ادا کرنے چاہیں۔ بجٹ میں مدارس کیلئے رقم مختص کرنی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں امتیازی نظام تعلیم کا خاتمہ ہونا چاہیے۔ حکمران علماء کو ترقی کی راہ میں رکاوٹ سمجھ رہے ہیں۔ ظلم پر خاموش رہنا ظلم  کرنے کے برابر ہے۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی ایک شفاف جماعت ہے، عوام کو اس جماعت پر اعتماد کرنا چاہیے۔

گزشتہ روز لاہور سے جاری ایک بیان میں سینیٹر سراج الحق نے کہا تھا کہ اگر موجودہ حکومت کو پانچ سال پورے کرنے کا موقع دیا گیا تو پھر یہی رہے گی عوام نہیں ہوں گے۔ انہوں نے کہا تھا کہ خوشحالی اورتبدیلی تشہیری پروگراموں سے نہیں بلکہ دیانتدار حکمرانوں سے آتی ہے۔

سینیٹر سراج الحق نے ارباب اقتدار کو کڑی نکتہ چینی کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ کہ حکومت نے پناہ گاہیں اور لنگر خانے کھول کر دنیا بھر میں ایٹمی پاکستان کے وقار کو دھبہ لگایا ہے۔